انتہائی اعلیٰ خاتون پولیس آفیسر کو اس کے شوہر نے انتہائی شرمناک کام کرتے رنگے ہاتھوں پکڑلیا، پورے ملک میں ہنگامہ برپاہوگیا

انتہائی اعلیٰ خاتون پولیس آفیسر کو اس کے شوہر نے انتہائی شرمناک کام کرتے ...
انتہائی اعلیٰ خاتون پولیس آفیسر کو اس کے شوہر نے انتہائی شرمناک کام کرتے رنگے ہاتھوں پکڑلیا، پورے ملک میں ہنگامہ برپاہوگیا

  

حیدرآباد(نیوز ڈیسک) پولیس والے تو دوسروں پر چھاپے مارتے ہیں لیکن بھارتی شہر حیدرآباد میں ایک پولیس والی پر چھاپہ پڑ گیا، وہ بھی عین اس وقت جب وہ اپنے آشنا کے ساتھ رنگ رلیاں منا رہی تھی۔ یہ چھاپہ کسی اور نے نہیں بلکہ اس خاتون پولیس افسر کے شوہر نے ہی مارا۔

ٹائمز آف انڈیا کے مطابق خاتون اے ایس پی سنیتا ریڈی دو سال قبل ایک پولیس انسپکٹر مالک ارجونا کی باس تھی مگر دونوں کے درمیان تعلق پیشہ ورانہ امور سے بڑھ کر معاشقے کی صورت اختیار کر گیا اور وہ اس کی محبوبہ بن گئی۔ اگرچہ ارجونا شادی شدہ اور بچوں والا ہے لیکن اے ایس پی سنیتا اس کے عشق میں گرفتار ہو گئی تھی اور دونوں وقتاً فوقتاً خفیہ ملاقاتیں بھی کرتے رہتے تھے۔ سنیتا کے شوہر سریندر ریڈی کو اپنی اہلیہ کا رویہ کچھ مشکوک محسوس ہوا تو اس نے پوچھ گچھ کی لیکن پولیس افسر بیوی سے بھلا کیونکر کوئی کامیاب تفتیش کر سکتا ہے۔ اس کی بیوی نے کچھ بھی ماننے سے انکار کر دیا، جس کے بعد وہ چھپ چھپ کر اس کی جاسوسی کرنے لگا اور اسے رنگے ہاتھوں پکڑنے کا تہیہ کر لیا۔

اتوار کی رات سنیتا اور اس کا آشنا ارجونا ایک بار پھر اکٹھے وقت گزارنے کے لئے ملے لیکن انہیں اندازہ نہیں تھا کہ برا وقت ان کے سر پر آن پہنچا تھا۔ کوکتپالی کے علاقے میں دونوں ایک فلیٹ میں موج مستی کر رہے تھے کہ سریندر ریڈی چھاپہ مارنے آن پہنچا۔ شرارتی جوڑے کی مزید بدقسمتی یہ ہوئی کہ سریندر اپنی اور سنیتا کی والدہ کو بھی ساتھ لے کر آیا تھا اور چھاپے کی ویڈیو بنانے کے لئے اس کا ایک قریبی عزیز بھی ساتھ تھا۔ رات کے اڑھائی بجے ان سب نے دھاوا بولا تو انہیں دیکھتے ہی سنیتا اور ارجونا کے ہوش ہی اڑ گئے۔ اس موقع پر ارجونا نے بھاگنے کی کوشش کی لیکن دونوں معمر خواتین نے جوتوں سے اس کی خوب پٹائی کی اور اس کی کوشش ناکام بنا دی۔ رنگے ہاتھوں پکڑی جانے والی سنیتا کی بھی پٹائی ہوئی جبکہ اس کے خاوند نے اسے طلاق دینے کا فیصلہ بھی کر لیا ہے۔ دونوں کے خلاف دھوکہ دہی اور فریب کاری کے الزامات کے تحت پرچہ بھی کٹوا دیا گیا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس