سعودی عرب کو گرفتار شہزادے کل کتنی رقم دینے پر تیار ہوگئے؟ جواب اتنا زیادہ کہ تمام اندازے غلط ثابت ہوگئے

سعودی عرب کو گرفتار شہزادے کل کتنی رقم دینے پر تیار ہوگئے؟ جواب اتنا زیادہ کہ ...
سعودی عرب کو گرفتار شہزادے کل کتنی رقم دینے پر تیار ہوگئے؟ جواب اتنا زیادہ کہ تمام اندازے غلط ثابت ہوگئے

  

جدہ(مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی حکومت نے درجن بھر شہزادوں سمیت سینکڑوں امراءکو کرپشن کے الزام میں گرفتار کر رکھا ہے جن میں سے اکثر رہائی کے عوض رقوم دینے پر آمادہ ہیں۔ اگر حکومت ان سے ڈیل کر لیتی ہے تو اسے اتنی رقم حاصل ہو گی کہ کوئی اندازہ بھی نہ کر سکتا تھا۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق گرفتار امراءجو رقم دینے پر آمادہ ہوئے ہیں وہ مجموعی طور پر 100ارب ڈالر (تقریباً100کھرب روپے) سے زائد بنتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق گرفتار افراد میں سے 90پہلے ہی حکومت کو بھاری رقوم واپس کرکے رہا ہو چکے ہیں جبکہ ابھی 95جدہ کے رٹز کارلٹن ہوٹل میں مقید ہیں۔ ان میں دنیا کے امیر ترین افراد میں شمار ہونے والے شہزادہ الولید بن طلال بھی شامل تھے جنہیں حکومت نے ہوٹل سے جیل میں منتقل کر دیا ہے۔یہ 100ارب ڈالر کی رقم ہوٹل میں قید امراءکی طرف سے وصول ہونے کا امکان ہے جبکہ شہزادہ الولید سے حکومت اس سے کئی گنا زیادہ رقم اور کئی کمپنیوں کا کنٹرول دینے کا مطالبہ کر رہی ہے تاہم میڈیا رپورٹس کے مطابق وہ تاحال اس پر رضامند نہیں ہو رہے۔سعودی اٹارنی جنرل شیخ سعود المجیب کا کہنا ہے کہ ”گرفتار افراد کے متعلق شاہی فرمان بہت واضح ہے۔ جو شخص بھی معاہدہ کرکے رقم واپس کرے گا اس کے خلاف کوئی قانونی کارروائی نہیں کی جائے گی اور رہا کر دیا جائے گا۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /عرب دنیا