سی پیک سے متعقل ایلس ویلزکا بیان قابل مذمت، امریکی اقدامات عالمی معیشت نہیں صرف اپنے مفاد کیلئے ہوتے ہیں: چین

  سی پیک سے متعقل ایلس ویلزکا بیان قابل مذمت، امریکی اقدامات عالمی معیشت ...

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی نائب وزیر خارجہ ایلس ویلز کے بیان پر چینی سفارتخانے نے درعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ سی پیک اور پاک چین تعلقات میں امریکی مداخلت کی مذمت کرتے ہیں۔چینی سفارتخانے کے ترجمان کی جانب سے جاری مذمتی بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکا کے منفی پراپیگنڈے کو سختی سے مسترد کرتے ہیں۔ امریکی اقدامات عالمی معیشت نہیں صرف اپنے مفاد کیلئے ہوتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ امریکا دنیا بھر میں پابندی کی چھڑی لے کر گھومتا ہے اور ممالک کو بلیک لسٹ کرتا ہے۔ امریکا حقائق سے آنکھیں چرا کر سی پیک پر اپنی بنائی ہوئی کہانی پر قائم ہے۔چینی سفارتخانے کے بیان میں کہا گیا ہے کہ چین پاکستانی عوام کے مفادات کو ترجیح دیتا ہے،پچھلے 5 برسوں میں 32 منصوبے قبل ازوقت مکمل ہوئے،جن سے 75 ہزار افراد کیلئے روزگار کے مواقع پیدا ہوئے۔چینی ترجمان نے کہا کہ سی پیک کام کر رہا ہے یا نہیں؟ اس کا جواب پاکستانی عوام نے دینا ہے نہ کہ امریکا نے۔ امریکا خود ساز قرضہ جات کی کہانی میں مبالغہ آرائی کر رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ امریکہ کا حساب کتاب کمزور اور ارادے بُرے ہیں۔ چین نے کسی ملک کو قرضوں کی ادائیگی کیلئے جبری طور پر مجبور نہیں کیا۔ چین پاکستان سے بھی غیر معقول مطالبات نہیں کرے گا۔

چین

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)وفاقی وزیرداخلہ اعجازاحمد شاہ نے کہا ہے کہ خطے کا امن صرف پاکستان نہیں بلکہ عالمی امن کیلئے بھی بے حد ضروری ہے، پاکستان اور چین کے تعلقات کو کوئی بیرونی خطرہ نہیں،پاکستان میں سکیورٹی کی صورتحال بہت بہتر ہوچکی ہے، سی پیک کے تمام منصوبے کامیاب ہوں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے چین کے سفیر یاؤ جنگ سے ملاقات کے دوران کیا، ملاقات میں چین اور پاکستان کے باہمی تعلقات اورسکیورٹی کے معاملات پرتبادلہ خیال کیا گیا۔اس موقع پرچینی سفیر نے کہاکہ خطے کے امن کیلئے پاکستان کی کوششیں قابل تعریف ہیں، چینی وزیر داخلہ عنقریب پاکستان کا دورہ کریں گے۔

وزیر داخلہ/چینی سفیر

مزید : صفحہ اول