ویزہ، ہوٹلز، ٹرانسپورٹ کی آن لائن ایڈوانس ادائیگی کی شرط،پاکستان میں عمرہ کاروبار بحران کا شکار

ویزہ، ہوٹلز، ٹرانسپورٹ کی آن لائن ایڈوانس ادائیگی کی شرط،پاکستان میں عمرہ ...

  



لاہور (میاں اشفاق انجم سے)عمرہ کاروبار بد ترین بحران کا شکار،مقابلہ کی دوڑ نے عمرہ ایجنٹوں کو دیوالیہ کر دیا،بڑے گروپ اور کمپنیاں ڈاؤن سائزنگ کرنے پر مجبور،اخراجات پورے کرنا نا ممکن ہو گیا،دفاتر بند ہونے لگے،عمرہ ویزہ منافع10ریال تک محدود ہو گیا،رہی سہی کسر تھیلہ ایجنٹوں نے 300میٹر حرم سے دور رہائش دینے کا نعرہ دے کر 800سے1000میٹر دے کر پوری کر دی ہے، عمرہ زائرین کا اعتماد سستا عمرہ ایجنٹوں نے بد اعتمادی میں بدل دیا ہے،سعودی وزارت الحج کی طرف سے عمرہ ویزہ،ہوٹلز،ٹرانسپورٹ کی ایڈوانس آن لائن ادائیگی کی شرط نے چھوٹے عمرہ ایجنٹوں کی کمر توڑ دی ہے،ائیر لائنز کے ایڈوانس بلاکس حاصل کر کے عمرہ زائرین کو مہنگے ٹکٹ فروخت کرنے والے بھی رُل گئے ہیں،مکہ،مدینہ میں ہوٹلز اور ٹرانسپورٹ میں کروڑوں کی سرمایہ کاری کرنے والوں کو بھی بڑے نقصان کا سامنا،بحران کی وجہ سے اب تک پاکستان سے جانے والے عرہ زائرین کی تعداد گزشتہ سال سے 30فیصد کم ہو گئی ہے،1440 ہجری عمرہ سیزن میں پاکستان سے 16لاکھ افراد نے عمرہ کی سعادت حاصل کی تھی،1000سے زائد نئے ٹریول ایجنٹوں نے لائسنس حاصل کیا تھا،1441ہجری عمرہ کاروبار زوال کی وجہ سے نئی عمرہ کمپنیوں کے لائسنس کا حصول رک گیا ہے،بڑی کمپنیوں اور گروپوں کی طرف سے ملازمین کی چھانٹی شروع ہو گئی ہے،درجنوں ایسے عمرہ ایجنٹ سامنے آئے ہیں جن کے لیے ماہانہ دفتر کا کرایہ دینا اور ملازموں کی تنخواہیں جاری رکھنا مشکل ہو گیا ہے،دلچسپ امر یہ ہے کہ وزارت مذہبی امور اربوں کا بجٹ رکھنے کے باوجود 16لاکھ عمرہ زائرین کے لیے ایک ڈیسک کے سوا کچھ نہیں کر سکی،عمرہ ایگریمنٹ کی تصدیق تک محدود ہے،دو لاکھ حاجیوں کے لیے سارا بجٹ لگایا جا رہا ہے،عمرہ کاروبار ہمیشہ کی طرح مدر پدر آزاد ہے،سستے عمرہ کے نام پر لٹنے والوں کی تعداد بھی بڑھ رہی ہے،مفت عمرہ،قسطوں میں عمرہ،انعامی عمرہ کے نام پربھی لوٹ مار جاری ہے،وزارت مذہبی اور تو دور کی بات ایف آئی اے بھی خاموش ہے۔

عمرہ کاروبار تباہ

مزید : صفحہ آخر