قومی خوشحالی سروے‘ میرٹ دفن“ ضلع مظفر گڑھ میں 450سے زائد چہیتے بھرتی کرنیکا کاانکشاف

قومی خوشحالی سروے‘ میرٹ دفن“ ضلع مظفر گڑھ میں 450سے زائد چہیتے بھرتی کرنیکا ...

  



مظفرگڑھ (سٹی رپورٹر)قومی خوشحالی سروے شروع ہونے سے قبل ہی کرپشن اقربا پروری کا شکار ہوگیا،سینکڑوں من پسند افراد کو بھرتی کرنے کا پلان فائنل کرلیا گیا ملازمین بھرتی کرنے کا معیار یکسر نظر انداز کر دیا گیا تفصیل کے مطابق حکومت پاکستان نے ملک کے دیگر اضلاع کی طرح مظفر گڑھ میں بھی ایس ڈی پی آئی نامی این جی او کو یہ سروے کرانے کی ذمہ داری دی گئی ہے مگر سروے شروع ہونے سے قبل ہی بے ضابطگیاں دیکھنے میں آرہی ہیں اور اس سلسلہ (بقیہ نمبر7صفحہ12پر)

میں ضلع بھر میں 450 زائد افراد بھرتی کئے گئے ہیں جن کی بھرتی کیلئے من مرضی کی گئی ہے اور اقربا پروری کرتے ہوئے قریبی لوگوں کو بھرتی کر کے میرٹ کی دھجیاں اڑائی گئی ہیں سٹاف کی بھرتی کیلئے چند مخصوص افراد کے انٹرویو کئے گئے جبکہ جنہیں بھرتی کیا گیا ان کا انٹرویو ہی نہیں کیا گیا ذرائع کے مطابق بھرتی کئے گئے افراد کی ٹریننگ کے بعد جو ٹیسٹ کرایا گیا انہیں بوٹی فراہم کی گئی اور من پسند افراد کو ٹیسٹ میں پاس کرایا گیا اس کے علاوہ سٹاف بھرتی میں مقامی اراکین اسمبلی کو بھی مکمل خوش کرنے کی کوشش کی گئی اور ناتجربہ کار اور ان ٹرینڈ سٹاف بھرتی کر لیا گیا اس کے علاوہ ریفریشر کے نام پر کئی لوگوں کو بھرتی کر لیا گیا اور ان لوگوں کا ریفریشر کرایا گیا جنہوں نے ٹریننگ ہی نہیں کی تھی ذرائع کے مطابق سٹاف کی بھرتی کے دوران مکمل طور پر میرٹ کو نظر انداز کر کے معیار پر پورا اترنے والے افراد کا استحصال کیا جا رہا ہے عوامی و سماجی حلقوں نے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے اعلٰی حکام اور ایس ڈی پی آئی کے افسران کے علاوہ ڈی سی مظفر گڑھ سے بھی مطالبہ کیا کہ قومی خوشحالی سروے کو ناکام بنانے کی سازش کے خلاف عملی اقدامات کیے جائیں۔

سروے

مزید : ملتان صفحہ آخر