کوٹ ادو میں مضر صحت گھی‘ آئل فروخت کرنیکا انکشاف‘ شہری بیمار‘ متاثرین کا احتجاج

کوٹ ادو میں مضر صحت گھی‘ آئل فروخت کرنیکا انکشاف‘ شہری بیمار‘ متاثرین کا ...

  



کوٹ ادو (تحصیل رپورٹر) حکومت پنجاب کے”صحت مند پنجاب“کے دعوے صرف کاغذوں تک محدود ہیں،کوٹ ادو اور گر دو نواح میں ضلعی وتحصیل انتظامیہ کی ملی بھگت سے مضر صحت اور غیر معیاری اور غیر رجسٹرڈ کمپنیوں کے گھی اور آئل کی ڈھڑلے سے فروخت جاری ہے،مذکورہ ناقص اور غیر معیاری گھی اور آئل شہر میں قائم بیکریوِں سویٹ پیلسوں اور چھوٹے بڑے ہوٹلوں سمیت سموسہ پکوڑا ودیگر کھانے پینے کی اشیاء میں استعمال ہو رہا ہے جس کے استعمال سے بچے بوڑھے نوجوان اور خواتین مختلف پیٹ(بقیہ نمبر10صفحہ12پر)

اور معدے اور دیگر موذی امراض کی بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں جبکہ ڈیلر چند پیسے کما نے کی خا طر عوام کو بیمار کرنے میں دن رات اپنا کام جاری رکھے ہو ئے ہیں،دوسری طرف حکومت پنجاب کی جانب سے بنائی جانے والی پیور فوڈ ایکٹ ٹیم ایک مذاق بن کر رہ گئی ہے،علاقہ مکینوں نے شدید احتجا ج کر تے ہو ئے وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان خان بزدار،کمشنر ڈیرہ غازیخان نسیم صادق،ڈپٹی کمشنر مظفرگڑھ انجینئر امجد شعیب خا ن ترین اور اسسٹنٹ کمشنر کوٹ ادو ڈاکٹر فیاض علی جتالہ سے مطالبہ کیا کہ کوٹ ادوشہرو گر دو نواح میں غیر معیاری اور مضر صحت غیر رجسٹرڈ آئل اورگھی کی سپلا ئی کرنے والوں ڈیلروں کے خلاف اپریشن کیا جائے اور بیکریوں،ہوٹلوں اور سویٹ پیلسوں ودیگر اشیاء میں غیر معیاری ناقص گھی آئل استعمال کرنے والوں کے خلاف سخت کاروائیکی جائے تاکہ شہریوں کو صاف ستھری اور معیاری گھی سے تیار شدہ اشیاء میسر آ سکیں

متاثرین

مزید : ملتان صفحہ آخر