آئی جی سندھ پروفیشنل ہونے کے بجائے سیاسی بن رہے ہیں، مرتضی وہاب

آئی جی سندھ پروفیشنل ہونے کے بجائے سیاسی بن رہے ہیں، مرتضی وہاب

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)وزیر اعلی سندھ کے مشیر قانون و ماحولیات اور ترجمان سندھ حکومت بیرسٹر مرتضی وہاب نے سندھ اسمبلی کے میڈیا کارنر پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ آئی جی سندھ پولیسنگ پر توجہ دیں وہ محاذ آرائی میں پروفیشنل بننے کے بجائے پولیٹیکل بنتے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آئی جی کا کام ملاقاتیں کرنا نہیں ہے بلکہ بہترین پولیسنگ کا کردار ادا کرنا یے اور اس معاملہ پر کوئی بحران پیدا نہیں ہوا بلکہ وفاقی حکومت کے ساتھ مشاورت جاری ہے اور امید ہے کہ جس طرح پنجاب اور خیبرپختونخوا میں صوبائی مشاورت کے زمرے میں اقدامات اٹھائے گئے بالکل اسی طرح سندھ میں وفاقی حکومت صوبہ کی رائے کا احترام کرے کیونکہ وزیراعظم اس وقت بیرون ملک کے دورے پر ہیں ان کی وطن واپسی پر یہ معاملہ احسن طریقے سے حل کردیا جائے گا۔ صحافیوں کے سوالات کے جواب دیتے ہوئے ترجمان سندھ حکومت نے کہا کہ سلیکٹیڈ حکومت کے نااہل راہنما بریکنگ نیوز اور خبریں بنانے کے بجائے سامنے آئیں اور عوام کی خدمت کریں اور ڈیڑھ سال ہونے کو آرہا ہے مگر ان نااہل حکمرانوں کو باتیں کرنے سے ہی فرصت نہیں جبکہ سندھ حکومت کے عملی اقدامات آج عوام کے سامنے ہیں پیپلز پارٹی کی عوامی حکومت نے صرف کراچی میں آٹھ سڑکیں تعمیر کرائیں جبکہ وفاقی حکومت گرین لائن منصوبہ پر سست روی سے کام کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کیا پنجاب اور خیبرپختونخوا میں آٹے کا بحران سندھ حکومت نے پیدا کیا ہے وہاں تو تحریک انصاف کی لاڈلی حکومت ہے۔ ان کو صرف سندھ حکومت کا فوبیا ہوچکا ہے بلاول بھٹو کے دھابے جی پمپنگ اسٹیشن کا افتتاح کرنے سے جو تکلیف تحریک انصاف کی مقامی قیادت کو ہو رہی ہے وہ بھی سب کے سامنے ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ پاکستان کی واحد سیاسی جماعت ہے جو صرف عوام کو خوشخبریوں پر ٹرخا رہی ہے اب تو یہ سلیکٹیڈ جب کوئی خوشخبری دیتے ہیں تو عوام کے دل سہم جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آٹے کے بحران سے نپٹنے کے بجائے تحریک انصاف نے اپنی توپوں کا رخ سندھ حکومت کی جانب کردیا ہے کیا گندم امپورٹ کرنے کا فیصلہ سندھ حکومت نے کیا ہے جس کی مخالفت اب وفاقی وزرا بھی کر رہے ہیں مگر یہ عقل و شعور سے عاری ہیں ان کو عوامی ریلیف کا احساس تک نہیں ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر