سینیٹ قائمہ کمیٹی قانون وانصاف میں نیب آرڈیننس پر بحث

سینیٹ قائمہ کمیٹی قانون وانصاف میں نیب آرڈیننس پر بحث

  



اسلام آباد (آن لائن) سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے قانون وانصاف کے دوران نیب آرڈیننس پر بحث کے دوران کمیٹی کو بتایا گیا کہ نیب آرڈیننس صدرمملکت ڈاکٹر عارف نے واپس لے لیا ہے۔سینیٹر جاوید عباسی کی زیرصدارت ہونے والے اجلاس کے دوران سینیٹر اعظم سواتی نے کمیٹی کو بتایا کہ قومی اسمبلی سے نیب کا ترمیمی بل واپس لے لیاگیا ہے، تاہم ڈی جی نیب اس بات سے لاعلمی کا اظہارکیا۔سینیٹر فاروق ایچ نائیک کا کہنا تھا کہ اسمبلی کا یہ قدم غیر آئینی ہے۔چیئرمین کمیٹی سینیٹر جاوید عباسی نے کہا کہ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی جانب سے بل کمیٹی کو بھیجا گیا ہے، اسی بل پر کمیٹی میں پر بات کرنی ہے۔اجلاس کے دوران قومی شناختی کارڈ پر نشان لگانے سے متعلق بحث کے دوران چیئرمین نادرا نے بتایا کہ شناختی کارڈ پر ڈاٹ لگانا نا ممکن نہیں ہے کیونکہ پاکستان کا شناختی کارڈ بین الاقوامی معیار ہے۔ انہوں نے بتایا کہ شنا ختی کارڈ کیلئے ہماری سفارش ہے کہ اس طریقہ کار کے مطابق ویب پر کوئی طریقہ کار اپنالیا جائے۔اگر ہم اعضا ء عطیہ کرنے کے حوالے سے شناختی کارڈ پر ڈاٹ لگائیں گے تو پھر اس حوالے سے سوال بھی کرنا ہوگا۔اگر کمیٹی کی یہ ہی سفارش ہے کہ ڈاٹ لگایا جائے تو ہم ڈاٹ لگا دیں گے۔ڈی جی نیب نے کمیٹی کو بتایا کہ فاروق ایچ نائیک نے نیب کا دورہ کیا اورانہیں نیب کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔ اجلاس کے دوران ڈی جی نیب زاہد شاہ نے نیب کی کارکردگی کے بارے میں کمیٹی کو بریفنگ دی تاہم ڈی جی نیب کی بریفنگ کو آئندہ اجلاس تک ملتوی کردیا گیا۔ڈی جی آپریشن نیب نے کہا کہ رولز نہ ہونے کی وجہ سے ہمیں بھی مشکلات کا سامنا ہوتا ہے۔متعدد مرتبہ رولز بنانے کی کوشش کی گئی لیکن ناگزیر وجوہات کی بنا پر یہ عمل مکمل نہ ہوسکا۔بل پر مزید بحث آئندہ اجلاس تک موخر کردی گئی۔جاوید عباسی نے کہا کہ چیرمین سینیٹ نے بڑے اہم مسئلے پر خط لکھا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ فاٹا انضمام کے بعد فاٹا سے سینیٹ اراکین خیبرپختونخواہ میں شامل ہوگئے ہیں۔اگر فاٹا کی سیٹیں خیبرپختونخواہ کو دی جائیں تو یہ بھی ممکن نہیں ہوگا۔چیرمین سینیٹ نے تجویز دی ہے کہ ان سیٹوں کو تمام صوبوں میں ایڈجسٹ کرلیا جائے۔کمیٹی کی اگلی میٹنگ میں اس معاملے پر اراکین تیاری سے آئیں۔یہ بہت ہی اہم اور سنجیدہ مسئلہ ہے۔اس معاملے پر صوبوں کا موقف بھی لیا جائے۔بحث اگلے اجلاس تک موخر کردی گئی۔

سینیٹ قائمہ کمیٹی

مزید : صفحہ اول