آئی جی کی تبدیلی میں وزیراعظم کی مرضی بھی شامل ہے: وزیر اعلٰی سندھ

آئی جی کی تبدیلی میں وزیراعظم کی مرضی بھی شامل ہے: وزیر اعلٰی سندھ

  



میرپورخاص(بیورو رپوٹ)مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ آئی جی سندھ کی تبدیلی میں وزیر اعظم کی مرضی بھی شامل ہے، وفاق نے پیپلزپارٹی کے خلاف اتحاد بنایا ہے،وزیر اعظم کو بھی کسی ایک گروپ کا نہیں بلکہ پاکستان کا وزیراعظم بننا چاہیے، گندم کا بحران گڈز ٹرانسپورٹر کے باعث بنا۔وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ نے  پاکستان پیپلزپارٹی کے مرحوم رکن سندھ اسمبلی سیدعلی مردان شاہ کے گھرپہنچے اوران کے انتقال پران کے ورثا سے تعزیت  اورفاتحہ خوانی کی۔اس موقع پر صوبائی وزیرثقافت سید سردار شاہ سمیت ارکان قومی وصوبائی اسمبلی بھی موجود تھے۔بعدازامیڈیا سے گفتگو میں وزیراعلیٰ سندھ نے کہاکہ آئی جی سندھ کے معاملے پر وزیر اعظم سے ایک بار نہیں کئی بار رابطہ ہوا، ہم ایک پیج پر ہیں،انہوں نے کہاکہ سندھ میں دوسری بار آٹے کا بحران پیدا ہوا، پہلی بار نواز شریف کے دور میں بحران ہوا جب گندم ایکسپورٹ کی گئی بعد میں یوکرین سے گندم خریدی گئی جو خراب تھی، اس حکومت نے بھی گندم ایکسپورٹ کی اور اب امپورٹ کی جا رہی ہے۔مراد علی شاہ نے کہا کہ نواز شریف دور حکومت میں بھی وفاق سے تعاون کیا اور اس حکومت سے بھی کر رہے ہیں، موجودہ وزیر اعظم کو بھی کسی ایک گروپ کا نہیں بلکہ پاکستان کا وزیر اعظم بننا چاہیے۔ انہوں نے کہا سی سی آئی کے اجلاس میں 8 میں سے 6 ممبران نے وزیر اعظم سے کہا کہ گیس پر پہلا حق سندھ کا ہے۔وزیر اعلی سندھ نے سیہون میں مجسٹریٹ کی جانب سے لڑکی سے جنسی زیادتی معاملے پر کہا کہ چیف جسٹس سے امید کرتے ہیں کہ وہ متاثرہ لڑکی کو انصاف دلائیں گے جبکہ حکومت نے مقدمہ درج کرنے کو کہا ہے۔

مزید : صفحہ اول