سندھ کا بیرون ملک سے گندم اور چینی بر آمد کرنے پر پابندی لگانے کا مطالبہ 

سندھ کا بیرون ملک سے گندم اور چینی بر آمد کرنے پر پابندی لگانے کا مطالبہ 

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ حکومت نے وفاق سے بیرون ممالک گندم اور چینی برآمد کرنے پر پابندی لگانے کا مطالبہ کردیا ہے۔ اس ضمن میں وزیرزراعت سندھ محمد اسماعیل راہو نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت نے خود کہا ہے کہ ملک میں گندم کی قلت ہے اسے دیکھتے ہوئے وفاق پابندی لگائے۔ وفاق بیرون ملک چینی ایکسپورٹ اور امپور ٹ کرنے پر بھی پابندی لگائے۔ اسماعیل راہو نے کہا کہ نیازی سرکار نے دس لاکھ ٹن چینی بیرون ممالک بھیجی، جس کی وجہ سے چینی مہنگی اور بحران ہوا ہے۔ وفاق نے پابندی نہ لگائی تو آئندہ سال ملک میں گندم اور چینی کا بڑا بحران پیدا ہوسکتا ہے۔ وفاق ایسے فیصلے کرنے سے پہلے صوبوں کو بھی اعتماد میں لے۔ وفاق نے جہاز والے جادوگر کو فائدہ پہنچانے کہ لیے گندم اور چینی کا جان بوجھ کر بحران پیدا کیا ہے۔انہوں نے کہاکہ کراچی کے لانڈھی گودام سے مختلف بچت بازاروں میں 28 ہزار 650 دس کلو آٹے کی بیگز پہنچ چکے ہیں۔ دو دن میں بچت بازاروں میں 22 ہزار کے قریب آٹے کی بیگز شہریوں نے خریدے۔ سندھ میں رواں سال گندم کی بوائی کا ٹارگٹ 11 لاکھ 50 ہزار ہیکٹرز رقبہ پر رکھا گیا تھا جبکہ گندم کی پیداوار کا ٹارگیٹ 38 لاکھ میٹرک ٹن رکھا گیا تھا۔ سال 2019,20 میں گندم کی بوائی 11 لاکھ 14 ہزار8 سو 30 ھیکٹرز پر کی گئی, اس مقابلے میں گذشتہ سال 2018-19 میں 10 لاکھ 52 ھزار 7 سو 23 ہیکٹرز پر گندم کاشت کی گئی, سندھ میں رواں سال 38 لاکھ میٹرک ٹن گندم کی پیداوار متوقع ہے. انہوں نے کہا کہ دودن میں سو کلو کی33 ہزار گندم کی بوریاں فلورملز کو جاری کی گئی ہیں,60 سے زائد آٹے کی ٹرکیں کراچی کے مختلف مقامات پر کھڑی کردی گئیں ہیں۔

مزید : صفحہ اول