زینب بل کو موثر بنانے کیلئے اراکین اسمبلی تجاویز دیں: امیر حیدر ہوتی

زینب بل کو موثر بنانے کیلئے اراکین اسمبلی تجاویز دیں: امیر حیدر ہوتی

  



نوشہرہ (بیورورپورٹ )عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر نائب صدر اور قومی اسمبلی میں اے این پی کے پارلیمانی لیڈر امیر حید خان ہوتی نے کہا ہے کہ زینب کیس میں قومی اسمبلی نے سزاوں کے خلاف قائمہ کمیٹی نے بل پاس کیاہے اور اگر اس میں کوئی خامی ہے تو اراکین اسمبلی ان خامیوں کو دور کرنے کیلئے اپنے تجاویز دے کر بل کو موثر بنانے میں اپنا کردار ادا کریں عوامی نیشنل پارٹی اس سلسلے میں خیبر پختونخواہ اسمبلی میں بہت جلد بل پیش کریں گی بچوں کو جنسی درندگی سے بچانے کیلئے عبرتناک سزائیں دلوانا ضروری ہے تاکہ ان واقعات کا تسلسل روک جائے اور پاکستان کا مستبل جنسی درندوں سے محفوظ ہو سکے ان خیالات کا اظہار انہوں نے زیارت کاکاصاحب میں رنما ہونے والے دردناک واقعہ پر متاثرہ خاندہ سے تعزیت کے بعد میڈیا کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ضلعی صدر جمال خٹک، جنرل سیکرٹری انجینئر حامد علی خان، میاں یحییٰ شاہ کاکا خیل، تحصیل صدر زاہد خان، میاں بابر شاہ کاکاخیل، عرفان خٹک بھی موجود تھے امیر حید خان ہوتی نے کہا کہ کاکا صاحب جیسے واقعات پاکستان میں جئی سالوں سے تسلسل سے ہو رہے ہیں ایسے واقعات کیوں ہو رہے ہیں اور اس کے سدباب کیلئے حکومت اور دارے کیا کر رہی ہے کیا ایسے واقعات سے پاکستان، اسلام اور ہمارا پورا معاشرہ بدنام نہیں ہو رہا انہوں نے کہا کہ ملک کی تمام اکائیاں اپنی ذمہ داریاں پوری طرح ادا نہیں کی جارہی ہے وقت کا تقاضا ہے کہ تعلیمی ادارے، عدالتیں، میڈیا اپنا کردار صحیح انداز سے ادا کریں اور قوم بھی خود احتسابی کے عمل سے خود کو گزارے انہوں نے مزید کہا کہ ایسے واقعات میں ملوث عناصر کو سخت سے سخت سزائیں ملنی چاہیے کیونکہ اب ملک کی معصوم بچیوں اور بچوں کے تحفظ ناگزیر ہو چکا ہے حکومت ایسے واقعات کی روک تھام اور سدباب کیلئے موثر قانون سازی کریں اور تعلیمی ادارے والدین، میڈیا نسل نو کی تربیت کیلئے عملی اقدامات کریں۔

مزید : صفحہ اول