ایک شرمناک واٹس ایپ گروپ میں شمولیت نے کرکٹر کے سارے خواب توڑ دئیے، سلیکشن کمیٹی نے نام دیکھنے سے بھی انکار کردیا

ایک شرمناک واٹس ایپ گروپ میں شمولیت نے کرکٹر کے سارے خواب توڑ دئیے، سلیکشن ...
ایک شرمناک واٹس ایپ گروپ میں شمولیت نے کرکٹر کے سارے خواب توڑ دئیے، سلیکشن کمیٹی نے نام دیکھنے سے بھی انکار کردیا

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ٹام کوہلر کیڈمور برطانیہ کا ابھرتا ہوا کرکٹر تھالیکن اس نے ایک ایسا شرمناک واٹس ایپ گروپ بناڈالا کہ اس کا کیریئر تباہ ہو کر رہ گیا۔ میل آن لائن کے مطابق یارک شائر کے بلے باز ٹام کوہلر نے ایک واٹس ایپ گروپ بنایا جس میں برطانیہ کے دیگر نوجوان کھلاڑیوں کو شامل کیا۔ اس گروپ میں کھلاڑی خواتین کے ساتھ جنسی تعلق کے متعلق باتیں کرتے تھے اور خواتین کے ساتھ اپنی شرمناک تصاویر شیئر کرتے تھے۔ گزشتہ سال اپریل میں کوہلر ہی کی ٹیم کے کھلاڑی ایلیکس ہیپ برن نے ایک لڑکی کے ساتھ جنسی تعلق کی تصاویر اس گروپ میں پوسٹ کی تھیں۔

اگلے روزوہ لڑکی پولیس کے پاس چلی گئی اور ایلیکس کے خلاف جنسی زیادتی کا مقدمہ درج کروا دیا۔ تب معلوم ہوا کہ یہ تصاویر لڑکی کی رضامندی سے نہیں بلکہ اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے دوران بنائی گئی تھی۔ اس مقدمے میں ایلیکس ہیپ برن کو 5سال قید کی سزا ہوئی۔ دوسری طرف یہ شرمناک گروپ بنانے پر ٹام کوہلر پرپابندی لگا دی گئی اور سلیکشن کمیٹی نے اس کا نام کھلاڑیوں کی فہرست میں دیکھنے سے انکار کر دیا۔

اب ایک سال پابندی کا شکار رہنے کے بعد بالآخر ٹام کوہلر کی معافی قبول کر لی گئی ہے اور اسے آسٹریلیا کے دورے کے لیے انگلینڈ لائنز سکواڈ کا حصہ بنا لیا گیا ہے۔ اپنی اس حرکت پر ٹام کوہلر کا کہنا ہے کہ ”میں نے ایک گناہِ بے لذت کیا۔ ایسا واٹس ایپ گروپ بنانا بہت خوفناک آئیڈیا تھا جس پر مجھے شدید پچھتاوا ہے اور یہ پچھتاوا تمام عمر رہے گا۔ میں جانتا ہوں کہ میں اپنی اس حرکت سے کرکٹ کے کھیل کی بدنامی کا باعث بنا ہوں۔ میں اس پر لوگوں اور اپنی ٹیم انتظامیہ سے معافی کا خواستگار ہوں۔“

مزید : کھیل