’جنوبی افریقہ کیخلاف سیریز میں ہوم گراؤنڈ کے فائدے کے باوجود خوش فہمی کا شکار نہیں ہو سکتے‘

’جنوبی افریقہ کیخلاف سیریز میں ہوم گراؤنڈ کے فائدے کے باوجود خوش فہمی کا ...
’جنوبی افریقہ کیخلاف سیریز میں ہوم گراؤنڈ کے فائدے کے باوجود خوش فہمی کا شکار نہیں ہو سکتے‘
سورس:   Twitter

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) جنوبی افریقہ کے خلاف ٹیسٹ میچ کی تیاری کیلئے پاکستان ٹیم کی نیشنل سٹیڈیم کراچی میں پریکٹس جاری ہے اور پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اظہر علی کا کہنا ہے کہ جنوبی افریقہ کیخلاف سیریز میں پاکستان کو پیش آنے والے چیلنجز کا بخوبی اندازہ ہے اور ہوم گراؤنڈ کے فائدے کے باوجود بھی کسی قسم کی خوش فہمی کا شکار نہیں ہوسکتے۔

تفصیلات کے مطابق اظہر علی نے کہا کہ کورونا وائرس کے باعث پیدا ہونے والے حالات کھلاڑیوں کیلئے مشکل ہیں لیکن انہیں بہانہ نہیں بنایا جاسکتا، خوشی کی بات ہے کہ ایک بڑی ٹیسٹ ٹیم پاکستان آئی ہے جس کیخلاف سیریز کیلئے بھرپور تیاریاں کر رہے ہیں، قومی ٹیم کو اندازہ ہے کہ جنوبی افریقہ کیخلاف سیریز میں پاکستان کو کیا چیلنجز درپیش آ سکتے ہیں، ہوم گراؤنڈ کے فائدے کے باوجود بھی کسی قسم کی خوش فہمی کا شکار نہیں ہوسکتے۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کی پریکٹس کے بعد میڈیا سے آن لائن گفتگو میں اظہر علی نے کہا کہ کسی بھی ٹیم کیلئے ہوم گراؤنڈ پر کھیلنا اچھی بات ہے اور ہر ٹیم کو ہوم گراؤنڈ پر فائدہ ملتا ہے لیکن جنوبی افریقہ کی باﺅلنگ لائن مضبوط ہے، فاسٹ باﺅلرز کیساتھ ساتھ ان کے سپنرز بھی بہت اچھے ہیں، خاص طور پر کیشیو مہاراج ان کنڈیشنز پر اچھی باﺅلنگ کرسکتے ہیں اس لئے پاکستانی بیٹسمینوں کو جنوبی افریقہ کیخلاف کافی مستحکم ہوکر کھیلنا ہوگا۔

تجربہ کار بیٹسمین نے مزید کہا کہ جنوبی افریقہ جیسی ٹاپ ٹیم کا پاکستان آنا کافی مثبت بات ہے، اس سے پاکستان کرکٹ کو فائدہ ہوگا۔ پاکستانی بیٹسمینوں نے پچھلی ہوم سیریز میں بھی اچھا پرفارم کیا ہے اور اوے سیریز میں بھی انفرادی اننگز کھیلی ہیں، سب کو اندازہ ہے کہ جنوبی افریقہ سے سیریز کافی اہم ہے اور سب کی ہی خواہش ہے کہ وہ اچھی سے اچھی کارکردگی دکھائیں۔ 

ایک سوال پر ٹاپ آرڈر بیٹسمین نے کہا کہ ٹیم کی ضرورت کے مطابق بیٹنگ آرڈر تبدیل کرنے میں کوئی حرج نہیں، اگر ٹیم کو ون ڈاؤن پر درکار ہے تو اس پوزیشن پر کھیلیں گے، اوپننگ درکار ہے تو وہاں، خوشی اس بات کی زیادہ ہوتی ہے کہ ٹیم کیلئے اپنا حصہ ڈالیں تاہم ساتھ ساتھ انہوں نے کہا کہ ہر کسی کی خواہش یہی ہوتی ہے کہ ایک فکسڈ بیٹنگ نمبر ہو۔

مزید :

کھیل -