ٹرمپ اور طالبان میں ہونے والے امن معاہدے کا مستقبل کیا ہوگا؟جوبائیڈن حکومت نے اہم اعلان کردیا

ٹرمپ اور طالبان میں ہونے والے امن معاہدے کا مستقبل کیا ہوگا؟جوبائیڈن حکومت ...
ٹرمپ اور طالبان میں ہونے والے امن معاہدے کا مستقبل کیا ہوگا؟جوبائیڈن حکومت نے اہم اعلان کردیا

  

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن)نو منتخب امریکی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ وہ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور طالبان کے درمیان طے ہوئے افغان امن معاہدے کا جائزہ لے گی۔

برطانوی نشتریانی ادا رے کے مطابق امریکی صدارتی دفتر کی ترجمان کا کہنا ہے  کہ وائٹ ہاؤس اس بات کی یقین دہانی کرنا چاہتا ہے کہ افغان طالبان ملک میں تشدد میں کمی اور دہشت گرد عناصر سے اپنے تعلقات ختم کرنے سمیت اس معاہدے کے تحت کیے گئے اپنے وعدوں کی پاسداری کر رہے ہیں۔

امریکی صدر جو بائیڈن کے اعلیٰ مشیر برائے قومی سلامتی جیک سلیوان نے اس جائزے کی تصدیق کے لیے افغان حکام سے بات کی ہے۔سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے افغانستان سے ترجیحی بنیادوں پر اپنی فوج واپس بلانے پر رضامندی ظاہر کی تھی۔گذشتہ برس طے پانے والے معاہدے میں کہا گیا تھا کہ اگر طالبان اپنے وعدوں پر عمل کرتے ہیں اور القاعدہ سمیت دیگر عسکریت پسندوں کو اپنے زیر کنٹرول علاقوں میں کام نہیں کرنے دیتے  تو امریکہ اور اس کے نیٹو اتحادی 14 ماہ میں تمام فوجیں افغانستان سے واپس بلا لیں گے۔

مزید :

بین الاقوامی -