انڈونیشا کی قومی کرنسی کی قدر میں مسلسل کمی

انڈونیشا کی قومی کرنسی کی قدر میں مسلسل کمی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


۱جکارتہ(اے پی پی) انڈونیشیا کی قومی کرنسی روپیہ کی قدر میں مسلسل کمی اور کرنٹ اکاﺅنٹ خسارے نے جنوب مشرقی ایشیاءکی سب سے بڑی معیشت بارے تحفظات میں اضافہ کردیا جبکہ بنک آف انڈونیشیا نے صورتحال کو سنبھال دینے کیلئے ڈالر کے ذخائر مقامی نکوں کو فروخت کرنا شروع کردیئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق گزشتہ ایک سال کے دوران انڈونیشائی روپیہ کی قیمت میں مسلسل 9 بار کمی واقع ہوئی جو ایشیاءمیں بھارت کے بعد سب سے زیادہ ہے جب مئی میں بھارتی روپیہ اپنی تاریخ کی کم ترین سطح پر رہا۔ انڈونیشیا کے مرکزی بنک نے قومی کرنسی کی مسلسل گرتی قیمت کے باعث مداخلت کرتے ہوئے اپنے ڈالر کے ذخائر مقامی بنکوں کو فروخت کرتے ہوئے انہیں تجویز پیش کی ہے کہ وہ ملک سے ڈالرز کا اخراج روکنے کیلئے مدتی اکاﺅنٹس کھولیں۔ انڈونیشیا یونیورسٹی کی ایک ماہر معاشیات لانا سوئیلٹو نگسی کا کہنا ہے کہ قومی کرنسی کی مسلسل گرتی قدر سے معاشی ترقی کی رفتار سست پڑ جائےگی اس کے علاوہ افراط زر اور اہم اشیاءکی قیمتوں میں اضافہ جبکہ پیداواری صلاحیت میں سستی آئے گی۔ یاد رہے کہ انڈونیشیاءجنوب مشرقی اشیاءکی بڑی معاشی قوت ہے تاہم عالمی کساد بازاری اور ملکی کرنسی کی مسلسل گرتی قدر کے باعث اسے سخت مشکلات درپیش ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -