عدلیہ انصاف کی فراہمی میں مغربی طرز حکومت پر انحصار کرتی ہے : خالد شہزاد فاروقی

عدلیہ انصاف کی فراہمی میں مغربی طرز حکومت پر انحصار کرتی ہے : خالد شہزاد ...
عدلیہ انصاف کی فراہمی میں مغربی طرز حکومت پر انحصار کرتی ہے : خالد شہزاد فاروقی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور(پ ر)جمعیت اہلِ حدیث پاکستان کے مرکزی رہنما حافظ خالد شہزاد فاروقی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے جج صاحبان دو ٹوک اور فوری انصاف فراہم کرنے کی صلاحیت سے محروم ہیں ،انصاف کی فراہمی کے لئے قرآن و سنت کو معیار بنانے کی بجائے عدلیہ مغربی طرزِ حکومت پر انحصار کرتی ہے جس کی وجہ سے آج پوری قوم اسلامی نظامِ حیات کے ثمرات سے محروم اور اسلامی طرزِ زندگی سے لاعلمی کی بنیاد پر غیر اسلامی نظام زندگی اپنا کر ذلت و گمراہی کی دلدلوں میں سر تا پاﺅں تلک دھنسی ہوئی ہے۔بھٹہ چوک بیدیاں روڈ پر جمعیت اہلِ حدیث لاہور کے زیر اہتمام”موجودہ نظامِ زندگی اور صراطِ مستقیم“کے موضوع پر سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے حافظ خالد شہزاد فاروقی نے کہا کہ غیر اسلامی اور سودی نظام ِ زندگی نے پوری قوم کو سماجی اور معاشی حوالے سے اپنی زنجیروں میں جکڑ رکھا ہے ،سود جو اللہ سے جنگ کرنے کے مترادف ہے اسے معیشت کی مجبوری کا نام دیکر زبر دستی قوم پر مسلط کر دیا گیا ہے اور ایک اسلامی ملک کہلانے والے دیس میں خوشنما رنگوں کے پردے میں قو م کو سودی کاروبار کی ترغیب دی جارہی ہے اوربعض علماءبھی اس فریب کاری کا نشانہ بن چکے ہیںاور علماءکی اکثریت اللہ سے کھلم کھلا جنگ کرنے والوں کو خاموشی کے ساتھ جنگ کرتا ہوا دیکھ رہے ہیں ۔ حافظ خالد شہزاد فاروقی نے کہا کہ سود کے حق میں سٹے لانے والے اور سپریم کورٹ جس نے سود کے حق میں سٹے دیا دونوں اسلام کے مجرم ہیں ،ان مجرموں سے نہ تو ملک وقوم کی بھلائی کی توقع رکھی جا سکتی ہے اور نہ ہی اللہ سے جنگ کرنے والے عوام کے خیر خواہ ہو سکتے ہیں ،انہوں نے کہا کہ ملک و قوم کی فلاح کے لئے قرآن وسنت کے دامن کو تھامنا پڑے گا اور صراطِ مستقیم پر قائم ہونا پڑے گا نہیں تو ذلت و رسوائی ہمارا مقدر ہو گی ۔سیمینار سے جمعیت اہلِ حدیث لاہور کے امیر علامہ مولانا اصغر فاروق ،مولانا قاری عبدالوحید سلفی،میاں عامر بشیر،مولانا قاری یونس ریحان اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔

مزید :

لاہور -