6 ماہ سے ڈیوٹی ڈرا بیک ریفنڈز کی ادائیگیاں تعطل کا شکار ہیں‘انجم ظفر

6 ماہ سے ڈیوٹی ڈرا بیک ریفنڈز کی ادائیگیاں تعطل کا شکار ہیں‘انجم ظفر

  

لاہور(کامرس رپورٹر) ڈیوٹی ڈرا بیک ریفنڈ کی عدم ادائیگی کے باعث لاہور کے لیدر ایکسپوٹرز بدترین مالی بحران کا شکار ہوگئے ہیں۔ چیئر مین ایکسپورٹ کمیٹی پاکستان ٹینرز ایسوسی ایشن (نادرن زون) انجم ظفر نے ایک بیان میں بتایا کہ متعلقہ کسٹم کلکٹوریٹ (اپریزمنٹ) لاہور میں چیف اکاؤنٹس آفیسر کی عدم تعیناتی کے باعث گذشتہ چھ ماہ سے ڈیوٹی ڈرا بیک ریفنڈز کی ادائیگیاں تعطل کا شکار ہیں۔ جس کی وجہ سے لیدر ایکسپوٹرز کو شدید مالی مشکلات کا سامنا ہے ۔ انجم ظفرنے بتایا کہ المیہ یہ ہے کہ صرف انتظامی امور میں تاخیر کے باعث ایکسپورٹرز اپنے چیک نہیں وصول کر پارہے اور اس ضمن میں برآمدکنندگان کی45کروڑ سے زائد رقوم پھنسی ہوئی ہیں۔ ایسوسی ایشن نے اس ضمن میں متعلقہ کلکٹرزصاحبان سے متعدد میٹنگزکیں جو کہ تا حال سود مند ثابت نہ ہو سکیں۔

اور ہر گزرتے دن کے ساتھ ان میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ اگر کسٹمز ڈیپارٹمنٹ جلد اور تواتر کے ساتھ ریفنڈ کی رقوم کی ادائیگیاں نہ کر سکا تو اس بات کو شدید خدشہ پیدا ہو جائے گا کہ آنے والی عید پر لیدر ٹینریز کھالوں کی خریداری نہ کر سکیں۔ تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے انجم ظفر صاحب نے بتایا صرف لیدر ٹینریز کی مارکیٹ میں کھالوں کی دلچسپی کے باعث ہی مختلف افراد اور تنظیمیں عید پر کھال اکٹھی کرتی ہیں ۔

اگر ٹینرز اپنی مالی مشکلات کے باعث انھیں بروقت ادائیگیاں نہ کر سکے تو قوی امکان ہے کہ افراد اور ادارے ان کھالوں کو اکٹھا کرنے کامعقول انتظام نہ کر سکیں اور اس صورت کروڑوں کی کھالیں ضائع ہو جائیں گی۔انجم ظفر صاحب نے حکومت اور ایف بی آر پر زور دیا کہ وہ اس صورتحال کا فوری نوٹس لیں اور متعلقہ کلیکٹوریٹ کو تاکید ارسال کریں کہ لیدر ٹینریز کیلئے ریفنڈز کی فوری ادائیگی کیلئے ہر ممکن اقدامات کریں اورمتواتر ادائیگیوں کے ذریعے لیدر ایکسپورٹرز کی مالی مشکلات کا فوری سدِ باب کیا جائے۔

مزید :

کامرس -