افغانستان،مختلف جھڑپوں،بارودی مواد پھٹنے سے48دہشتگرد،17سکیورٹی اہلکار ہلاک

  افغانستان،مختلف جھڑپوں،بارودی مواد پھٹنے سے48دہشتگرد،17سکیورٹی اہلکار ...

  



کابل (آئی این پی)افغان صوبہ غزنی میں اپنے ہی پاس موجو بارودی مواد سے 3خود کش بمباروں سمیت24 طالبان ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے۔صوبہ بدخشاں میں بھی طالبان اور سکیورٹی فورسز میں جھڑپیں جاری جبکہ جنوبی صوبہ ارزگان میں ایک گائیڈڈ میزائل حملہ میں 24شدت پسند جبکہ 17سکیورٹی فورسز کے اہلکار جاں بحق ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق افغان وزارت دفاع کے ترجمان نے بین الاقوامی خبر رساں اداروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان کے صوبہ غزنی کے نواں ڈسٹرکٹ کے گاؤں موسیٰ کلیم  میں موجود طالبان جو خود کش بمباروں کو تربیت دیتے تھے اور جیکٹس تیار کر رہے تھے۔ طالبان کے اس گروہ کے پاس بڑی تعداد میں بارود موجود تھا۔ دہشت گرد یہ بارودی مواد افغانستان کے دیگر علاقوں میں منتقل کر کے دہشت گردانہ کارروائیاں کرنا چاہتے تھے کہ اچانک منتقلی کے دوران بارودی مواد پھٹ پڑا جس کے نتیجے میں 3خود کش بمباروں سمیت24طالبان دہشت گرد ہلاک جبکہ درجنوں زخمی ہو گئے۔ ترجمان نے کہا کہ غزنی میں افغان فورسز کے مسلسل اور تابڑ توڑ حملوں نے طالبان کی پوزیشن کو کمزور کر دیا ہے جس کی وجہ سے وہ علاقہ بدر ہو رہے ہیں۔یہ واقعہ بھی علاقہ بدری کے دوران پیش آیا۔ واضح رہے کہ ابھی تک طالبان یا کسی اور گروپ کی جانب سے اس خبر کی تصدیق و تردید نہیں کی گئی ہے۔ دریں اثناء غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ادھر افغانستان کے جنوبی صوبہ ارزگان میں گائیڈڈ میزائل حملے میں 24طالبان ہلاک اور 17زخمی ہوگئے تاہم افغان وزارت دفاع نے یہ نہیں بتایا ہے کہ اس حملے کو نیٹو کی قیادت والے اتحادی فوج نے یا پھر افغان فوج نے انجام دیا۔البتہ غیر ملکی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ یہ حملے افغان فورسز کی جانب سے کیے گئے، جبکہ اس دوران شدید مزاحمت کا بھی سامنا کرنا پڑا، شدت پسندوں نے فوجی اہلکاروں پر بھی میزائل داغے۔اس حملے کے بارے میں ابھی تک طالبان کا رد عمل سامنے نہیں آیا۔ افغانستان کے مختلف صوبوں میں طالبان کے حملوں میں سیکیورٹی فورسز کے 17 اہلکار مارے گئے جبکہ متعدد کے زخمی ہونے کی بھی اطلاعات ہیں۔مزید برآں افغان صوبہ بدخشاں میں بھی اتوار کے روز سے اب تک طالبان اور سیکورٹی فورسز مابین بھاری ہتھیاروں سے شدید جھڑپیں ہو رہی ہیں۔علاقہ بھر بارودی دھماکوں سے لرز رہا ہے۔ مقامی ا فراد نے مقامی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا ہے کہ یہاں پر افغان سیکورٹی فورسز  اور طالبان  مابین شدید جھڑپیں جاری ہیں۔ دونوں جانب سے بھاری ہتھیاروں کا بے دریغ استعمال کیا جا رہا ہے جن کی وجہ سے علاقہ میں بارود کی بو پھیلی ہوئی ہے سانس لینا بھی دشوار ہے۔

افغانستان

مزید : صفحہ آخر


loading...