مشیر وزیراعلیٰ کے پی پر ایل ایچ آر میں ہنگامہ آرائی ،دھمکیاں دینے کا الزام ،اجمل وزیر کی تردید

مشیر وزیراعلیٰ کے پی پر ایل ایچ آر میں ہنگامہ آرائی ،دھمکیاں دینے کا الزام ...

  



پشاور (آن لائن ) پشاور کے سرکاری ہسپتال ایل ایچ آر میں پروٹوکول نہ ملنے پر وزیراعلی خیبر پختونخوا کے مشیر اجمل خان وزیرکی جانب سے مبینہ طور پر آپے سے باہرہوکر ہنگامہ آرائی کرنے سمیت ڈاکٹروں کو سنگین نتاءج کی دھمکیاں دینے کے حوالے سے ایم ایس لیڈی ریڈنگ ہسپتال نے انتظامیہ کو مراسلہ ارسال کر دیا جس میں مشیروزیر اعلی خیبر پختونخوا مشیراجمل خان وزیر کی ہنگامہ آرائی سے ایمرجنسی وارڈ کی سر وسز متاثر ہونے کی شکایت کی گئی ہے، جبکہ ڈاکٹرز نے مشیروزیر اعلی کے پی اجمل وزیر کے نازیبا رویے کےخلاف کارروائی کا مطالبہ کیاہے ، اس ضمن میں مشیروزیر اعلی اجمل خان وزیرکا کہنا تھا وہ گزشتہ رات بلڈ پریشر ہائی ہونے پر بطور مریض لیڈی ریڈنگ ہسپتال گئے ، ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹرکا رویہ ہتک آمیز تھا،20 منٹ تک چیک اپ نہیں کرایا،اجمل خان وزیر نے وضاحت کی کہ انہوں نے لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں کوئی ہنگامہ آرائی نہیں کی، صرف نامنا سب رویہ کی شکایت کی ۔ ہسپتال انتظامیہ نے بھی ڈاکٹر کو قصور وار قرار دیا ہے ۔ ادھر پراونشل ڈا کٹر زایسوسی ایشن نے اپنے جاری کر دہ بیان میں کہا ہے حکومت اپنے مشیروں اور وزرا ء کو لگام دے،بصورت دیگر احتجاج کیا جائےگا ۔ واضح رہے سرکاری محکموں میں اراکین قومی و صوبائی اسمبلی کی مداخلت کی شکایات کے حوالے سے وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ ہفتے اپنے دورہ لاہور میں خصوصی گفتگو کی تھی ۔ ذراءع نے بتایا جمعرات کو کابینہ اجلاس کے دوران وزیراعظم سرکاری معاملات میں اراکین کی مداخلت پر بر ہم ہوئے تھے اورانہوں نے معاملے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے وزیراعلی اور کابینہ کو ہدایات جاری کی تھیں جبکہ وزیراعظم عمران خان نے کہا کسی بھی محکمے میں سیاسی مداخلت برداشت نہیں کی جائےگی، کسی بھی رکن قومی و صوبائی اسمبلی کی سرکاری معاملات میں مداخلت ناقابل قبول ہے ۔ عمران خان نے کہا تعلیم اور صحت کے شعبے میں خصوصی طور پر سیاسی مداخلت برادشت نہیں کی جائے گی ۔ وزیراعلیٰ سردار عثمان احمد خان بزدار کےساتھ ملاقات میں بھی بعض شکایات سامنے آنے پر وزیراعظم نے اس حوالے سے خصوصی ہدایات جاری کی تھیں ۔

ایل ایچ آر الزام

مزید : صفحہ آخر