خواتین بھی خودکش حملہ آور بننے لگیں

خواتین بھی خودکش حملہ آور بننے لگیں

  



دہشت گردوں نے ایک سال کے بعد خیبرپختونخوا میں پھر دہشت گردی کی ایک بڑی واردات کی ہے۔ اور اس میں مختلف حکمت عملی بھی اختیار کی پہلے پولیس چوکی پر حملہ کرکے توجہ اس طرف مبذول کرائی اور پھر جب زخمیوں کو ہسپتال منتقل کرنے کی جلدی کی جا رہی تھی تو ہسپتال کے باہر خودکش حملہ کر دیا۔ایسی واردات چند سال قبل کوئٹہ میں وکلا کے ساتھ بھی ہوئی تھی جب زخمی وکلا ہسپتال لائے جا رہے تھے تو وہاں دھماکہ کر دیا گیا۔ ڈیڑھ اسماعیل خان کی اس دہشت گردی میں غالباً پہلی مرتبہ ایک نوجوان لڑکی نے خود کو اڑایا اور یوں دہشت گردوں نے یہ ثابت کیا کہ ان کے پاس ایسے خودکش بمباروں کی کمی نہیں۔دہشت گردی کی اس واردات کا تعین سوچ سمجھ کر کیا گیا۔خیبرپختونخوا کی انتظامیہ اور پاک فوج کی توجہ 16قبائلی نشستوں کے الیکشن کی طرف تھی اور اس کا فائدہ اٹھایا گیا۔ ایک منصوبے کے تحت چوکی پر فائرنگ کرکے دو اہلکار شہید کئے گئے اور پھر خودکش دھماکہ ہوا۔اس دھماکے کا وقت بھی بہت اہم ہے کہ یہ ٹرمپ، عمران ملاقات سے ایک روز قبل کیا گیا اور ملک بھر کے میڈیا کی توجہ بھی ادھر مبذول ہوئی جبکہ امریکہ میں مختلف پیغام گیا۔ یہ توقع اور تجزیہ کیا جا رہا تھا کہ وزیراعظم کی ٹرمپ کے ساتھ ملاقات میں ڈومور اور دہشت گردی ضرور زیر بحث آئے گی اور وہاں موجود چیف آف آرمی سٹاف پاک افواج کی دہشت گردوں کے خلاف کارروائیوں کا ذکر کریں گے۔ یوں یہ حملہ اور دھماکہ ٹرمپ کو ڈومور کہنے میں زیادہ سہولت مہیا کرے گا۔اس امر سے یہ اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ اس دھماکے سے کس نے فائدہ اٹھانے کی کوشش کی اور کون یہ ثابت کرنا چاہتا ہے کہ پاکستان کے دعوؤں کے باوجود تاحال وارداتیں ہو رہی ہیں، یقینا وزیراعظم اور جنرل باجوہ کو اس سلسلے میں تھوڑی پریشانی ہو گی کہ اس سے ایک روز قبل ڈی جی آئی ایس پی آر نے کچھ دعوے بھی کئے تھے۔اس حملے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے اور یہ امر بھی مزید مذمت اور ملامت کا تقاضا کرتا ہے کہ اس میں نوجوان لڑکی کو آلہ کار بنا کر اس کی بھی جان لی گئی۔ توقع ہے کہ ہماری حکومتیں اور انتظامیہ ان حالات کا عمیق نظروں سے جائزہ لیں گی اور جہاں کہیں کوئی کمزوری واقع ہوئی ہے۔ اس کا ازالہ کیا جائے گا اور دہشت گردی کے مکمل خاتمے کی کوشش مزید تیز کی جائے گی۔دھماکے سے یہ بھی ثابت ہو گیا کہ دہشتگرد اب بھی منصوبہ بندی کر تے رہتے ہیں اور موقع ملتے ہی واردات کر دیتے ہیں۔

مزید : رائے /اداریہ


loading...