فیصلہ کن جدوجہد کا وقت آگیا،آئین کی حکمرانی پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو گا: مسلم لیگ (ن)

فیصلہ کن جدوجہد کا وقت آگیا،آئین کی حکمرانی پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو گا: مسلم ...

  



اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) مسلم لیگ(ن) کے مرکزی رہنماؤں نے کہا ہے کہ فیصلہ کن جدوجہد کا وقت آگیا ہے،اس ملک میں آئین کی حکمرانی پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کرسکتے چاہے ہمیں کتنی بڑی قیمت ہی ادا کیوں نہ کرنی پڑے، واشنگٹن میں سلیکٹڈ وزیراعظم نے تسلیم کیا کہ اپوزیشن کی گرفتاریاں حکومت کی ایماء پر ہو رہی ہیں،حکومت معیشت کیلئے رسک بن چکی ہے، افراط زر اس سال کے اختتام پر 18فیصد پر پہنچے گا،یہ وزیراعظم ثابت کررہا ہے کہ ان کے پاس نہ کوئی پلان ہے نہ صلاحیت ہے اور نہ تجربہ ہے اوپر کا خانہ خالی ہے، ان خیالات کا اظہار پیر کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ(ن) رہنماؤں احسن اقبال، مریم اورنگزیب اور مصدق ملک نے کیا۔احسن اقبال نے کہا کہ واشنگٹن میں سلیکٹڈ وزیراعظم نے پاکستانی کمیونٹی سے خطاب میں تسلیم کیا کہ اپوزیشن کی گرفتاریاں حکومت کی ایماء پر ہو رہی ہیں، نیب تو پہلے سے مشرف کے زمانے سے ایک خاص شہرت رکھتا ہے جیسے (ق) لیگ کو بچانے کیلئے استعمال کیا گیا ویسے ہی پی ٹی آئی کو بچانے کیلئے استعمال کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جتنے اپوزیشن رہنماؤں کو حراست میں لیا جاتا ہے اس کے مقابلے میں لاکھوں لوگ نئے پیدا ہو جاتے ہیں، حکومت نے بدترین ریاستی سنسر شپ کا استعمال کرتے ہوئے اپوزیشن کی ریلی کا بلیک آؤٹ کیا، جمہوریت کے لبادے میں بدترین آمریت مسلط کردی گئی ہے، عوام نے کبھی آمریت کو قبول نہیں کیا، ہم عوام کے بنیادی حقوق کو کسی کو سلب کرنے کی اجازت نہیں دیں گے، اس ملک میں آئین کی حکمرانی پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کرسکتے چاہے ہمیں کتنی بڑی قیمت ہی ادا کیوں نہ کرنی پڑے۔ احسن اقبال نے کہا کہ ہم نے جو 12000میگاواٹ بجلی پیدا کر کے لوڈشیڈنگ کا مسئلہ حل کیا، سی پیک کے ساڑھے 28ارب ڈالر کے منصوبے شروع کرکے دکھائے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے وہی تقریر کی جو کوئی سیاستدان موچی دروازے پر کھڑے ہو کر کرے گا وہاں جا کر کہا کہ میں نوازشریف کا ٹی وی،اے سی بند کرواؤں گا یہی میرا تمغہ ہے، اس کے اعصاب پر ملک کے اندر بھی نوازشریف سوار ہے اور باہر جا کر بھی وہ نوازشریف کے بارے میں ہی سوچتاہے۔۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر مصدق ملک نے کہا کہ ایل این جی کا حکومت سے حکومت کاکنٹریکٹ تھا جس میں 13.9فیصد پر ڈی ہوئی تھی، ایل این جی کا ٹرمینل شوکت عزیز کے دور سے لگانے کی کوشش کی جا رہی تھی لیکن نہیں لگ سکا، شاہد خاقان عباسی نے 11ماہ میں یہ ٹرمینل لگایا۔ایک سوال کے جواب میں مصدق ملک نے کہا کہ چیئرمین سینیٹ کو اخلاقی طور پر مستعفیٰ ہوجانا چاہیے،چیئرمین سینیٹ کے خلاف عدم اعتماد کیلئے ہمارے سینیٹر موجود ہیں اور موجود رہیں گے۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا کہ نالائق وزیراعظم کو ایل این جی اور ایل پی جی میں فرق معلوم نہیں، بات نالائقی، نااہلی اور بزدلی کی ہے، شاہد خاقان بزدل نہیں ہیں عمران خان بزدل ہیں، نیازی ایجنٹ بیورو بن چکا ہے، عمران خان نے جو تقریر کی لگ رہا تھا سپریٹنڈنٹ جیل بول رہا ہے، عمران خان وہاں بتاتے کہ میں ملک کو آئی ایم ایف میں گروی رکھ کر آیا ہوں۔انہوں نے کہا کہ نوازشریف ٹی وی نہیں دیکھتے،22کروڑ عوام کی آوازیں بند نہیں ہونگی وہ آپ کو این آر او نہیں دیں گے، شاہد خاقان عباسی کو پارٹی رہنماؤں سے ملنے نہیں دیا جا رہا، کوئی وزیراعظم کی کرسی پر بیٹھ کر بھی وزیراعظم نہیں اور کوئی کوٹ لکھپت میں بیٹھ کر بھی وزیراعظم ہے۔

مسلم لیگ (ن)

اوکاڑہ(نمائندہ پاکستان) مسلم لیگ ن اوکاڑہ کے ایم ا ین اے و مسلم کسان ونگ کے مرکزی صدر چوہدی ریاض الحق جج،یوتھ ونگ سٹی کے صدر محمد اکبر خان،منظوراحمد سپراء سے ملاقات میں مریم اورنگزیب کا کہنا تھا نواز شریف کے کارکنوں کے حوصلے بلند ہیں یہ جتنا چاہیں ظلم کر لیں انشاء اللہ ہم پیچھے نہیں ہٹنے والے نہیں، فیصل آباد میں جو حکمر ا نوں نے کیا یہ بوکھلاہٹ کی نشانیوں میں سے ایک ہے ان کی امرانہ سوچ کا پردہ چا ک ہو گیا ہے، عمران خان کے حواری ہمارا کچھ نہیں بگا ڑ سکتے، یہ الیکٹڈ نہیں سلیکڈ ہیں اِن کو خواب میں بھی نواز شریف تنگ کر تا ہے، عمران دیکھو نواز شریف آرہا ہے اور اس کی آنکھ کھل جا تی ہے اور نئے منصوبہ بنانے کا طریقہ سوچتا ہے کہ اب نواز شریف کے کس ساتھی کو گرفتار کیا جائے، ہم ان گیدڑ بھبکیوں سے ڈرنے والے نہیں،عمران حکومت کے دن گنے جا چکے ہیں جب گیدڑ کی موت آتی ہے تو وہ شہر کی طرف بھاگتا ہے یہی حال عمران خان کا ہے۔ جوحالات اس وقت پاکستان کے ہیں ایسے حالات کبھی بھی نہیں ہو ئے ان حالات کو تاریخ کبھی بھی معاف نہیں کریگی، نواز شریف پاکستان کا سرمایہ ہیں۔

مریم اورنگزیب

مزید : صفحہ اول


loading...