سہولیات ہیں کون سی جو واپس لینگے، پیسے جھاڑیوں پر لگے ہیں وزیر اعظم سے کہیں لے لیں: زرداری

  سہولیات ہیں کون سی جو واپس لینگے، پیسے جھاڑیوں پر لگے ہیں وزیر اعظم سے کہیں ...

  



اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کا کہنا ہے عمران خان کو بتادیا جائے ہم بیرکوں میں رہنے کے عادی ہیں۔احتساب عدالت میں جعلی اکاؤنٹس کیس کی سماعت کے دوران آصف زرداری روسٹرم پر آئے اور انہوں نے شہزاد اکبر کے بیان کا اخباری تراشا پیش کیا اور کہا شہزاد اکبر کہتے ہیں میری 32 جائیدادیں ہیں، عدالت شہزاد اکبر کو طلب کرکے اس بارے میں پوچھے۔ قبل ازیں عدالت میں پیشی کے موقع پر صحافی نے سوال کیا عمران خان کہتے ہیں امریکہ سے واپسی پر آپ سے سہولتیں واپس لے لیں گے، جس پر آصف زرداری نے کہا سہولتیں کون سی ہیں جو لے لیں گے، چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی کے حوالے سے پوچھے گئے سوال پر آصف زرداری نے کہا نہ میں نے انہیں بنایا اورنہ ہی میں اتارنے جا رہا ہوں، چیئرمین سینیٹ نہیں ہونگے تو ڈپٹی چیئرمین بھی نہیں ہونگے پھر ان کی مرضی۔سابق صدر کا یو ٹرن پر مبنی حیران کن جواب سن کرصحافی بھی ہکا بکا رہ گئے۔ انکا کہنا تھا جیلوں کے عادی ہیں، پیسے جھاڑیوں پر لگے ہیں وزیراعظم لے لیں۔ 

زرداری

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) سابق صدرمملکت آصف زرداری کے پاؤں میں اومنی گروپ کے خواجہ عبدالغنی مجید نے پناہ ڈھونڈ لی ہے؟ یہ استفسار سرگوشیوں میں اس وقت کیا گیا جب احتساب عدالت کے سابق جج ارشد ملک کی عدالت میں پیشی کیلئے آئے ہوئے اومنی گروپ کے عبدالغنی مجید کو شریک چیئرمین پی پی پی کے قدموں میں بیٹھے دیکھا گیا۔ آصف زرداری کی عدالت میں جتنی دیر بھی اومنی گروپ کے عبدالغنی مجید سے بات چیت ہوتی رہی وہ اتنی دیر تک ان کے قدموں میں بیٹھے رہے،جبکہ سابق صدر پاکستان نے عدالت میں پیشی کے دوران اپنی ہمشیرہ فریال تالپور سمیت دیگر پارٹی رہنماؤں سے ملاقات کی اور مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔ ملاقات کے بعد وہ عدالت سے روانہ ہوگئے۔ جعلی اکانٹس کیس میں پیشی کیلئے پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کو احتساب عدالت لایا گیا تو حکام نے اس موقع پر انتہائی سخت حفاظتی انتظامات کیے تھے۔ احتسا ب عدالت کے تمام داخلی و خارجی راستوں کو سیل کر دیا گیا تھا اور کسی بھی غیر متعلقہ شخص کے احاطے میں داخلے پر پابندی عائد تھی۔

ملاقاتیں 

مزید : صفحہ اول


loading...