ساہیوال ڈی پی او آفس میں خورد برد، 3 ملزم نیب کے حوالے

ساہیوال ڈی پی او آفس میں خورد برد، 3 ملزم نیب کے حوالے

  



لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج امیرمحمد خان نے ڈی پی او ساہیوال آفس میں 80 ملین روپے کے فراڈ کیس میں گرفتار 3 ملزمان توقیرخان، شاہد ریاض اور محمد علی کو6اگست تک جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا،دوران سماعت ایک ملزم خود کو بے گناہ کہتے ہوئے زاروقطار روتا رہا۔احتساب عدالت میں نیب نے ڈی پی او ساہیوال آفس میں 80ملین روپے کی کرپشن کیس میں ملوث 3 ملزمان توقیر خان، شاہد ریاض اور محمد علی کو میں پیش کیا گیا،عدالت کو بتایا کہ ملزمان نے ڈی پی او آفس کے فنڈ زجس کی مالیت 80ملین روپے بنتی ہے،مختلف دستخط کرکے خوردبرد کئے،ان سے یہ رقم برآمد کرنی ہے اور ان کے دیگرساتھی بھی ابھی گرفتار کرکے پوچھ گچھ کرنی ہے۔

،عدالت سے استدعا کہ ملزمون کا جسمانی ریمانڈ دیا جاے، دوران سماعت عدالت میں ایک ملزم توقیرخان روتارہا کہ وہ بے گناہ ہے، نیب نے اسے غلط پکڑا ہے تاہم عدالت میں نیب نے ریکارڈ پیش کیا اور ملزمان کے دستخطوں کے حوالے سے بتایا جس پر ملزمان کا کہنا ہے کہ ان کے جعلی دستخط کئے گئے، عدالت نے نیب کو حکم دیا کہ فرانزک سائنس لیبارٹری سے دستخطوں کی تصدیق کرائی جائے،عدالت نے ملزمان کو6اگست تک جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کرنے کا حکم دیتے ہوئے چھ اگست تک نیب کو جسمانی ریمانڈ دے دیاہے۔

مزید : علاقائی


loading...