سندھ حکومت اور نیشنل کمپنی آف کویت مفاہمتی یادداشتی پر دستخط

سندھ حکومت اور نیشنل کمپنی آف کویت مفاہمتی یادداشتی پر دستخط

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ حکومت اور نیشنل کمپنی آف کویت  کے درمیان سندھ میں پاور سیکٹر میں  سرمایہ کاری کے حوالے سے ایک مفاہمتی یادداشت(ایم او یو)  پر دستخط ہوئے۔کویتی کمپنی صوبائی حکومت کے  اشتراک سے متعلقہ صوبائی اور وفاقی اتھارٹیز سے منصوبوں کی ترقی اور درکار منظوری حاصل کی جائے گی۔ ایم او یو کے تحت  کویتی کمپنی انر ٹیک ہولڈنگس ویسٹ ٹو انرجی پروجیکٹس  میں سرمایہ کاری کرے گی۔ اس حوالے سے کراچی میں  50 میگاواٹ پاور پروجیکٹ سے آغاز کیا جائیگا اور اس کے ساتھ ساتھ صوبہ سندھ کے دیگر شہروں میں بھی  پاور پروجیکٹس لگائے جائیں گے اور  باہمی رضامندی کے ساتھ مقامات کی نشاندہی  کی جائے گی اور ان پر عملدرآمد کے حوالے سے اتفاق کیاگیا۔ دھابیجی اکنامک زون کے لیے  بلاتعطل بجلی  کی فراہمی کے لیے  ایک  ونڈ /سولر ہائیبر پاور پروجیکٹ  لگایا جائے گا جوکہ50 میگاواٹ سے شروع کیا جارہاہے۔صوبہ سندھ میں  پسماندہ اور دور دراز علاقوں /دیہاتوں کے لیے آف گرڈ مائیکرو گرڈ کی بھی باہمی طور پر نشاندہی کی جائے گی اور اس پر عملدرآمد کیاجائیگا، اس کے علاوہ کلین انرجی سے متعلق دیگر منصوبے بھی شروع کیے جائیں گے۔ایم او یو کے تحت  صوبائی حکومت اور کویتی کمپنیانویسٹمنٹ میمورینڈم  میں  اسٹریٹیجک پارٹنر شپ  کو ترقی دے گی تاکہ  منصوبوں کی فاسٹ ٹریک بنیادوں پر ترقی دینے کو یقینی بنایاجاسکے۔منصوبوں کے لیے متعلقہ حکومتی ایجنسی /ادارے سے لیٹرز آف انٹینٹ کا اجرا؛ منصوبوں کے لیے  زمین کی نشاندہی اور خریداری جس کے لیے سندھ حکومت انرٹیک کمپنی  کو  منصوبوں کے لیے طویل المدتی  لیز ایگریمنٹس کے تحت  زمین فراہم کرنے کی پابند ہوگی۔ انر ٹیک کمپنی  تمام ٹیکنیکل اسٹڈیز بشمول انٹر کنیکشن اسٹڈیز، جیو ٹیکنیکل  اینڈ ٹو پوگرافیکل اسٹڈیز، ماحولیاتی اثرات  کا اسسمنٹ اور فزیبیلیٹی اسٹڈی کی ذمہ دار ہوگی۔ ایم او یو کے تحت  سندھ حکومت  کے پاس یہ آپشن ہوگا کہ وہ انر ٹیک کے ساتھ منصوبوں کے لیے زمین  کی فراہمی کے ساتھ  ایکیویٹی پارٹنرشپ کرسکتی ہے۔ صوبائی حکومت اور متعلقہ وفاقی ایجنسیاں انرٹیک کے تعاون کے ساتھ منصوبوں  اور کام کرنے والے افراد کے لیے سیکوریٹی پلان تشکیل دیں گی۔اس ایم او یو کے تحت  تمام انفرادی منصوبے، انفرادی معاہدوں کے تحت  ہوں گے۔انفرادی منصوبوں میں سرمایہ کاری کے لیے دیگر ممکنہ سرمایہ کار  شراکت داروں کو بھی  شامل کیا جاسکتا ہے جوکہ سندھ حکومت کی پالیسی سے مشروط ہے۔انر ٹیک نے یاسر ملک کو  اپنا نمائندہ نامزد کیاہے جوکہ سندھ حکومت کے ساتھ منصوبوں پر ہونے والی پیشرفت کے حوالے سے رابطے میں رہے گا۔ ایم او یو پر دستخط  کی تقریب میں وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ کے ساتھ صوبائی وزرا امتیاز شیخ، سعید غنی اور مرتضی وہاب، چیف سیکریٹری ممتاز شاہ، وزیراعلی سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، سیکریٹری توانائی مصدق خان،  سیکریٹری خزانہ نجم شاہ، سیکریٹری بلدیات خالد حیدر شاہ، سیکریٹری انویسٹمنٹ احسن منگی، ایم ڈی سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ،  پی پی پی یونٹ کے ڈی جی خالد شیخ اور دیگر افسران شریک جبکہ کویت کے قونصل جنرل خالد عبداللہ الخلدی  اورکویتی کمپنی کے چیف ایگزیکٹو افسر عبداللہ المطہری   اورانٹرٹیک پاکستان/ہیڈ آف ایمرجنگ مارکیٹس، انرٹیک کے چیف ایگزیکٹو افسر یاسر ملک نے شرکت کی۔ 

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...