چارسدہ،پولیس تشدد سے جاں بحق ہونے ولاے شہری کے کیس نے نیا موڑ اختیار کر لیا

چارسدہ،پولیس تشدد سے جاں بحق ہونے ولاے شہری کے کیس نے نیا موڑ اختیار کر لیا

  



چارسدہ (بیو رو رپورٹ)باٹی خیل قوم کا گرینڈ جرگہ۔علی جان کلی میں تین بھائیوں کے تہرے قتل کیس کی جوڈیشنل انکوائری کا مطالبہ۔تہرے قتل کیس پر سیاسی سکورننگ کی مذموم کو شش کی گئی۔ ایک فرد کے ذاتی فعل کی ذمہ داری پورے قبیلے پر ڈالنا ناقابل فہم ہے۔ باٹی خیل قوم مظلوم خاندان کے شانہ بشانہ کھڑی ہے۔ مقتولین کے بچوں اور بیواؤں کی ہر فورم پر مدد کی جائیگی۔ باٹی خیل قوم اندوھناک واقعہ کی شدید مذمت کر تی ہے۔ ا س حوالے سے باٹی خیل قوم کا گرینڈ جرگہ محمد نعیم خان عمرزئی کے حجرہ میں زیر صدارت سرور خان بابا منعقد ہوا جس میں سابق ڈی جی ایف آئی اے ظفر اللہ خان، سابق کمشنر خالد خان،سابق کمانڈنٹ ایف سی لیاقت علی خان، سر ور خان، طاہر خان عمر زئی، عزیز اللہ خان اور دیگر مشران نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔اس موقع پر خطاب کر تے ہوئے باٹی خیل قوم کے سر ور خان، سابق ڈی جی ایف آئی اے ظفر اللہ خان، آیاز خان، صالح محمد خان،عزیز اللہ خان، طاہر خان اور دیگر نے کہا کہ تہرے قتل کیس میں باٹی خیل قوم کے کسی فرد نے مرکزی ملزم نادر خان کی کوئی مدد کی ہے اور نہ ان کے فرار میں سہولت کار ی کی ہے۔ مقتول خاندان پر باٹی خیل قوم کی طرف سے راضی نامہ کیلئے کوئی دباؤ نہیں ڈالا گیا ہے اور نہ ہم ایسا سوچ سکتے ہیں۔ مقررین نے کہا کہ باٹی خیل قوم نے ہمیشہ علاقے کی بے لوث خدمت کی ہے علاقے کے ہزاروں غریب نوجوانوں کو نوکریاں دی ہے جو اپنے بچوں کی کفالت کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک میں عمرزئی علی جان کلی میں ایک دردناکہ واقع رونماء ہوا تھا جن میں تین بھایؤں کو بے دردی سے قتل کیا گیا تھا اس واقع پر ہر پارٹی نے سیاست کی اور سیاسی سکورننگ کی مذمو م کو شش کی جس میں باٹی خیل خاندان کو ہدف تنقید بنا کر ہم پر بے جا الزامات لگائے گئے۔مقررین نے واضح کیا کہ ہر خاندان میں اچھے اور برے لوگ موجود ہوتے ہیں مگرکسی ایک فرد کے ذاتی فعل یا جرم کی ذمہ داری کو پورے قبیلے پر ڈالنا سمجھ سے بالا تر ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ ہم مظلوم خاندان کے ساتھ ساتھ کھڑے ہیں اور واقعے کی شفاف جوڈیشل انکوائری کا مطالبہ کرتے ہے تاکہ حقائق قوم پر واضح ہو جائے۔ انہوں نے کہا کہ اب سیاسی پوائنٹ سکورننگ کے بجائے یتیم بچوں اور بیوہ خواتین کے لئے کوئی عملی قدم اٹھانے کا وقت آ چکا ہے اس لئے ہماری کوشش ہے کہ قاتل کے گرفتاری کیساتھ ساتھ غمزدہ خاندان کے لئے تاحیات تنخواہ اور شہداء پیکچ کو ہر صورت یقینی بنایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ باٹی خیل خاندان چارسدہ کا ایک بڑا خاندان ہے جن میں زیادہ تر لوگ بڑے عہدوں پر فائز تھے اور آج بھی ملک و قوم کی خدمت کے لئے میدان میں ہیں۔ تاریخ گواہ ہے کہ ہم نے ہمیشہ ظالم کے مقابلے میں مظلوم کا ساتھ دیا ہے اور آئندہ بھی مظلوم کا ساتھ دیکر ظالم کا ہاتھ روکے نگے۔ گرینڈ جرگہ میں متاثرہ خاندان کو یقین دلایا گیا کہ باٹی خیل قوم آپ کے ساتھ کھڑی ہے اور حصول انصاف کیلئے ہر فورم پر ساتھ دے گی۔ اس موقع پر متاثرہ خاندان کے رشتہ دار بھی موجود تھے۔جرگہ میں فیصلہ کیا گیا کہ باٹی خیل خاندان کا ایک نمائندہ تنظیم جلد تشکیل دیا جائیگاجو بالکل غیر سیاسی ہو گا جس کے اعراض و مقاصد باٹی خیل خاندان کے آپس کے اختلافات کا خاتمہ اور علاقے کی ترقی اور خوشحالی ہو گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر