سکھر، کوئنس روڈ سے لاپتہ 6بچوں کے دریائے سندھ میں ڈوبنے کا انکشاف

سکھر، کوئنس روڈ سے لاپتہ 6بچوں کے دریائے سندھ میں ڈوبنے کا انکشاف

  



سکھر(بیور ورپورٹ)سکھر میں کوئنس روڈ سے جمعہ کے روز سے لاپتہ چھ بچوں کے دریائے سندھ میں ڈوبنے کا انکشاف ہوا ہے۔پولیس ذرائع کے مطابق ایک بچے کی لاش لاڑکانہ سے مل گئی ہے جبکہ ساتھ میں نہانے والے دوسرے بچے نے دیگر بچوں کے ڈوبنے کی تصدیق کردی ہے۔پولیس کے مطابق خوف کے باعث ساتھ میں نہانے والا بچہ گھر میں محصور اور بات کرنے سے گھبرا رہا تھا، بچے نے بتایا کہ دریا میں نہاتے ہوئے ایک دوسرے کو بچانے ہوئے سب بچے ڈوبے۔گذشتہ روز سکھر میں کوئنس روڑ کے رہائشی لاپتہ چھ بچوں کے والدین نے انتظامیہ کی بے حسی کیخلاف پریس کلب کے باہر احتجاج کیا تھا،ورثا نے الزام عائد کیا تھا کہ تیسرا روز ہے پولیس اور انتظامیہ معاملہ کو سنجیدہ نہیں لے رہی ہے،ہم اپنی مدد آپ کے تحت بچوں کو تلاش کر رہے ہیں انتظامیہ کی جانب سے کوئی تعاون نہیں کیا جا رہا ہے۔واضح رہے کہ کوئنس روڈ پر حماد پلازہ کے رہائشی چھے بچے جمعہ کی شام ہنستے کھیلتے گھر سے نکلے، گیارہ سے سولہ سال کے بچے محلے میں کرکٹ کھیلنے کے بعد کھیل کا سامان قریبی دکان پر رکھ کر دور نکل گئے۔لاپتہ بچوں کی عمریں گیارہ سے سولہ سال کے درمیان تھیں، پوری رات اور دن بھر کی مسلسل تلاش کے باوجود بچے نہیں ملے،16سالہ محمد قاسم،14 سالہ محمد انس،13سالہ احتشام اور گیارہ گیارہ سال کے احسان، عاصم اور حماد کی گمشدگی کی رپورٹ متعلقہ تھانے میں درج کرا ئی گئی تھی۔ایک محلے دار بچے کی نشاندہی پر دریائے سندھ کے کنارے زیرو پوائنٹ سے بچوں کے کپڑے اور جوتے ملے تھے،پولیس کے مطابق سی سی ٹی وی فوٹیج میں بچے زیرو پوائنٹ کی طرف جاتے ہوئے دیکھے گئے تھے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر