جب سے اقتدار میں آیا مافیا کا مقابلہ کررہا ہوں ، وزیر اعظم عمران خان

جب سے اقتدار میں آیا مافیا کا مقابلہ کررہا ہوں ، وزیر اعظم عمران خان
جب سے اقتدار میں آیا مافیا کا مقابلہ کررہا ہوں ، وزیر اعظم عمران خان

  



واشنگٹن  (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ میرا مقابلہ سیاسی پارٹیوں سے نہیں بلکہ مافیا سے تھا ، سپریم کورٹ نے بھی حکمران جماعت کو سسلین مافیا قرار دیا تھا، جب سے آئے ہیں مافیاکا مقابلہ کررہے ہیں۔

امریکی تھنک ٹینک یو ایس انسٹی ٹیوٹ آف پیس میں خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہاکہ میرا مقابلہ سیاسی پارٹیوں سے نہیں بلکہ مافیا سے تھا،میں نے 23 سال تک پاور میں آنے کیلئے محنت کی،میرا مقابلہ سیاسی پارٹیوں سے نہیں بلکہ مافیا سے تھا،میں بھی انہیں مافیا اس لیے کہتا ہوں کہ وہ 2 سیاسی جماعتیں 13 برس سے حکمران ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جب سے ہم حکومت میں آئے ہیں ہم مافیا کا مقابلہ کر رہے ہیں،پوری اپوزیشن مل کر سیاسی عدم استحکام لانے کی کوشش کر رہی ہے،دو بار انہوں نے بے یقینی پیدا کرنے کی کوشش کی ۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ10 ماہ بعد ہم نے معیشت کو مستحکم کرلیا ہے اور اب ہم آگے بڑھ سکتے ہیں اور ریفارمز شروع کرسکتے ہیں،پاکستان میں ریفارمز کا ایجنڈا بالکل صاف اور واضح ہے کہ ہم نے چوری کی دولت واپس لینی ہے اور اس کو انسانی ترقی پر خرچ کرنا ہے۔ ہم نے پاکستان میں کرپشن کے خلاف بڑی مہم شروع کردی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم کے نظام کو بہتر کریں گے،ہمارے پاس انگلش میڈیم سکولوں سے آنے والے بچوں کی تعداد 8 لاکھ اور سرکاری سکولوں کے بچوں کی تعداد 33 ملین ہے,مدرسوں سے آنے والے بچوں کی تعداد 25 لاکھ ہے،ہم یکساں نصاب لانے کی کوشش کر رہے ہیں ،ہم مدارس میں بھی سائنس مضامین لائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ہم ٹیکس اصلاحات لا رہے ہیں ۔21کروڑ لوگوں میں سے صرف 15 لاکھ لوگ ٹیکسز دیتے ہیں,ہم لوگوں کو ٹیکس دینے کا کہہ رہے ہیں لیکن اس پر کچھ ہڑتالیں کی جارہی ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ میں اسے احتساب کہتا ہوں اور وہ لوگ اسے سیاسی انتقام کہتے ہیں ،سیاسی مافیا کی جانب سے 10 سال میں ملک کا جو حال کردیا گیا ہے ،2008میں پاکستان پر قرضے 6 ہزار ارب روپے تھے لیکن ان دس سالوں میں قرضے 30 ہزار ارب پر پہنچ گئے۔ میں نے اس کی تحقیقات کیلئے کمیشن قائم کردیا ہے،60 کی دہائی میں پاکستان کی انڈسٹریل پروڈکشن سنگاپور، ملائیشیا ،فلپائن سمیت 4 ایشین ٹائیگرز کے برابر تھی۔ ہم معیشت کو انڈسٹریلائز کرنے جارہے ہیں ، ہم سرمایہ کاروں کو سہولیات دیں گے،ہم ایکسپورٹ انڈسٹری کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں۔

مزید : قومی