جنوبی وزیر ستان،قدرتی آفات سے متاثرہ اور جاں بحق کے لواحقین امدد سے محروم

جنوبی وزیر ستان،قدرتی آفات سے متاثرہ اور جاں بحق کے لواحقین امدد سے محروم

  

ٹانک(نمائندہ خصوصی)جنوبی وزیرستان قدرتی آفات سے متاثرہ اور جان بحق افراد کے لواحقین کو امدادی چیکس نہ مل سکے تبدیل ہونے والے اکاونٹنٹ نے تمام ریکارڈز غائب کردیا، کروڑوں روپے خرد برد کا انکشاف،۔ تفصیلات کے مطابق جنوبی وزیرستان میں گزشتہ کئی سالوں سے قدرتی آفات سے متاثرہ اور جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین نے ڈپٹی کمشنر آفس کے چکر لگا لگا کر تھک ہار کر بے بس ہوگئے ہیں جس کی بنیادی وجہ سابق اکا?نٹنٹ طفیل احمد آرائیں بتایا جاتاہے جو جنوبی وزیرستان سے تبدیل ہوکر تحصیل دار درازندہ تعینات ہیں لیکن وہ بدستور جنوبی وزیرستان اکاونٹنٹ آفس کے امور وہاں سے ریموٹ کنٹرول کے ذریعے چلا رہے ہے، ذرائع کے مطابق سابق اکاونٹنٹ نے ضلعی انتظامیہ کا چیک بک سیف میں تھالہ کرکے بند کردیا ہے اور دوسری جانب موصوف درازندہ میں بطور نائب تحصیل دار ڈیوٹی سرانجام دے رہا ہے جو شاید سرکاری اہلکاروں کا اپنی نوعیت کا پہلا انوکھا واقعہ ہے، اعلی تعلقات رکھنے کے باعث ضلعی انتظامیہ کے افسران بھی ان کے سامنے گھٹنے ٹیک دیئے ہیں ڈپٹی کمشنر دفتری ذرائع کے مطابق گذشتہ دنوں جب ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر یاسر سلمان نے ڈپٹی کمشنر کی ہدایت پر متاثرہ افراد کو چیک دینے کیلئے چیک بک طلب کیا تو پتہ چلا کہ تبدیل ہونے والے اکاونٹنٹ طفیل آرائیں نے اپنے دور میں بطور اکاونٹنٹ کی گئی سیاہ کاریاں عیاں ہونے کے ڈر سے اکاونٹ افس جنوبی وزیرستان کا تمام ریکارڈ چیک بک سمیت اسٹمپس ساتھ لیکر غائب کردیئے ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -