کار سروس اسٹیشنز، جانور نہلا کر روزانہ ہزاروں روپے کمانے لگے

  کار سروس اسٹیشنز، جانور نہلا کر روزانہ ہزاروں روپے کمانے لگے

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)شہر میں گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں کے سروس اسٹیشنوں پر قربانی کے جانوروں کو نہلانے کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے جبکہ مختلف علاقوں میں قائم سیکڑوں کار سروس اسٹیشنوں کے مالکان روزانہ جانوروں کو نہلا کر ہزاروں روپے کمانے لگے۔لاک ڈاؤن اور معاشی سست روی کی وجہ سے آمدن میں کمی کا سامنا کرنے والے سروس اسٹیشن مالکان کو قربانی کے جانوروں کی سروس سے آمدن بڑھانے کا موقع مل گیا،شہر کے مختلف علاقوں میں سروس اسٹیشنوں پر گائے واش کے بینرز آویزاں کر دیے گئے، شیمپو کے ذریعے قربانی کے جانوروں کی سروس کا رجحان گزشتہ چند سال سے زور پکڑ رہا ہے، شہری گلیوں اور گھروں کے باہر قربانی کے جانوروں کو نہلانے کے بجائے گائے واش کی سہولت کو ترجیح دیتے ہیں۔شہریوں کے مطابق گائے سروس سے جانور نکھر جاتے ہیں اور ان کی خوبصورتی میں اضافہ ہو جاتا ہے بیشتر رہائشی علاقوں میں پانی کی قلت ہے اور فلیٹ کلچر فروغ پانے کی وجہ سے گلیوں میں جانوروں کو نہلانا دشوار ہوگیا ہے اس صورتحال میں گائے واش ایک بہترین سہولت ہے۔گائے واش کی سروس فراہم کرنے والوں کا کہنا ہے کہ گائے بیل کی سروس جانوروں کی قدوقامت کے لحاظ سے وصول کی جاتی ہے اوسط جانور کی سروس 200 سے 250 روپے میں کی جاتی ہے جبکہ بڑے اور بھاری بھرکم جانور 300 سے 400 روپے میں نہلائے جارہے ہیں، لیاقت آباد 6نمبر نرسری کے اطراف عام دنوں میں موٹر سائیکل کی سروس کرنے والے تمام سروس اسٹیشن ان دنوں گائے واش کر رہے ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -