وہ گاﺅں جہاں کورونا وائرس سے بچنے کے لیے گاﺅں والوں نے بچوں کو شراب پلانا شروع کردی

وہ گاﺅں جہاں کورونا وائرس سے بچنے کے لیے گاﺅں والوں نے بچوں کو شراب پلانا ...
وہ گاﺅں جہاں کورونا وائرس سے بچنے کے لیے گاﺅں والوں نے بچوں کو شراب پلانا شروع کردی

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت کے ایک گاﺅں میں لوگوں نے کورونا وائرس سے بچانے کے لیے اپنے بچوں کو شراب پلانی شروع کر دی۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق اس گاﺅں کا نام پارسن پالی ہے جو بھارتی ریاست اوڑیسا کے ضلع ملکنگری میں واقع ہے۔ اس گاﺅں کے لوگوں کا خیال ہے کہ شراب نوشی انہیں کورونا وائرس سے بچا سکتی ہے، چنانچہ وہ خود تو شراب پیتے ہی تھے، اب انہوں نے اپنے بچوں کو بھی اس قبیح عادت پر لگا دیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق سوشل میڈیا پر اس گاﺅں کی کئی ویڈیوز تیزی سے وائرل ہو رہی ہیں جن میں گاﺅں کے بچوں کو ایک جگہ اکٹھے کرکے انہیں شراب پلائی جا رہی ہوتی ہے۔ ہندوستان ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق اس گاﺅں کے بزرگوں نے لوگوں کو نصیحت کی تھی کہ وہ اپنے بچوں کو مقامی شراب، جسے سلاپا کہا جاتا ہے، پلائیں۔ یہ شراب مقامی لوگ ایک درخت کی چھال سے بناتے ہیں۔ ان بزرگوں کا کہنا تھا کہ یہ شراب بچوں کو وائرس سے محفوظ رکھے گی۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -