’چینی فوج امریکہ میں چینی قونصل خانے کی معلومات چراتی ہے‘ امریکی سفارتکار نے سنگین ترین الزام لگادیا

’چینی فوج امریکہ میں چینی قونصل خانے کی معلومات چراتی ہے‘ امریکی سفارتکار ...
’چینی فوج امریکہ میں چینی قونصل خانے کی معلومات چراتی ہے‘ امریکی سفارتکار نے سنگین ترین الزام لگادیا

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) ٹرمپ انتظامیہ کی طرف سے گزشتہ روز امریکی شہر ہوسٹن میں واقع چینی قونصل خانے کو بند کرنے کا حکم جاری کیا گیا ہے اور اب ایک امریکی سفارتکار نے اس حکم کی مفصل وجہ بھی بیان کر دی ہے۔ اس سفارتکار کا نام ڈیوڈ سٹل ویل ہے جو امریکہ محکمہ خارجہ میں چوٹی کے ایسٹ ایشیاءآفیشل ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا ہے کہ ہوسٹن میں واقع چینی قونصل خانے کے ذریعے چینی فوج اہم امریکی معلومات چوری کر رہی تھی جس کی وجہ سے اسے بند کرنے کا حکم دیا گیا۔

ساﺅتھ چائنہ مارننگ پوسٹ کے مطابق ڈیوڈ سٹل ویل نے اس سنگین الزام میں مزید کہا ہے کہ ہوسٹن قونصل خانہ چینی فوج کی جاسوسی کی کوششوں کا مرکز بنا ہوا تھا۔ اس کے ذریعے وہ چینی طالب علموں کو ویزے دلواتی تھی۔ یہ طالب علم تربیت یافتہ ہوتے تھے جو ایسی تعلیم حاصل کرتے اور معلومات چوری کرکے چینی فوج کو پہنچاتے تھے کہ جن کی بدولت چینی فوج اپنی جنگی صلاحیتوں میں اضافہ کر سکے۔ ڈیوڈ سٹل ویل نے یہ الزام بھی عائد کیا کہ حال ہی میں اس قونصل خانے میں تعینات چینی قونصل جنرل اور دیگر سفارتکاروں نے ہوسٹن ایئرپورٹ پر اپنی جعلی شناخت استعمال کی۔ یہ لوگ کچھ چینی شہریوں کو ایئرچائنہ کی ایک چارٹرڈ فلائٹ پر چین لیجا رہے تھے۔ رپورٹ کے مطابق قونصل خانے کی بندش کا حکم دیئے جانے پر چین کی طرف سے شدید ردعمل ظاہر کیا گیا ہے۔ چینی حکام کا کہنا ہے کہ امریکہ کا یہ اقدام دونوں ملکوں کے تعلقات کو مزید کشیدہ کرنے کا سبب بنے گا۔

مزید :

بین الاقوامی -