مصری صدر قاہرہ میں القدس بارے عالمی کانفرنس منعقد کرائیں گے ¾ اسماعیل ہانیہ

مصری صدر قاہرہ میں القدس بارے عالمی کانفرنس منعقد کرائیں گے ¾ اسماعیل ہانیہ

            غزہ( پی پی سی )فلسطینی وزیراعظم اسماعیل ھنیہ نے انکشاف کیا ہے کہ مصری صدر ڈاکٹر محمد مرسی مقبوضہ بیت المقدس کو قابض صہیونی دشمن کی جانب سے درپیش خطرات اور ان کے انسداد کے حوالے سے قاہرہ میں ایک عالمی کانفرنس منعقد کرانے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ القدس بارے انٹرنیشنل کانفرنس سے متعلق مشاورت میں حماس کے وفد کو بھی شریک کیا گیا۔ اس کے علاوہ حماس کی قیادت نے ترک وزیراعظم رجب طیب ایردوآن اور مصری صدر ڈاکٹر محمد مرسی سے بھی اس حوالے سے مزید بات چیت کی ہے۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق اسماعیل ھنیہ نے ان خیالات کا اظہار غزہ کی پٹی میں قائم اسلامی یونیورسٹی کے زیرانتظام کالج آف نرسنگ کے سالانہ کانووکیشن سے خطاب کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ بیت المقدس کی موجودہ صورت حال کے بارے میں کہنے کو بہت کچھ ہے۔ اس وقت عالم اسلام کی بنیادی ذمہ داری ہے کہ وہ مصر کی قیادت میں بیت المقدس کو لاحق خطرات دور کرنے کے لیے متحد ہوں۔ کیونکہ بیت المقدس محض فلسطین کا حصہ نہیں بلکہ یہ اسلامی اور عرب ثقافت کا جزو ہے۔

اسماعیل ھنیہ کا کہنا تھا کہ حال ہی میں قاہرہ میں مصری صدر محمد مرسی اور ترک وزیراعظم رجب طیب ایردوان کے ساتھ ملاقاتوں میں بھی بیت المقدس کا معاملہ زیر بحث آیا۔ اس موقع پر حماس کے نمائندہ وفد نے بیت المقدس کو درپیش خطرات کے حوالے سے فوری عالمی کانفرنس کے انعقاد کی ضرورت پر زور دیا۔ مصری صدر نے اس کی نہ صرف تائید کی بلکہ جلد ہی قاہرہ میں بیت المقدس کے حوالے سے کانفرنس کے انعقاد کا اعلان کیا۔وزیراعظم اسماعیل ھنیہ کہہ رہے تھے کہ حماس کے وفد نے ترک وزیراعظم رجب طیب ایردوآن سے ملاقات میں مسجد اقصی میں فلسطینی اور مسلمان طلبا کے لیے تعلیمی سہولیات کی فراہمی پر زور دیا۔ ترک وزیراعظم کو یہ بتایا گیا کہ قبلہ اول میں طلبا کی موجود گی اسے دشمن کی جانب سے لاحق خطرات کوکم کرنے اور یہودیوں کی شرپسندانہ سرگرمیوں کی روک تھام میں مدد مل سکتی ہے۔

مزید : عالمی منظر


loading...