یوحنا آباد میں دو افراد کو زندہ جلانے والے 42ملزمان پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

یوحنا آباد میں دو افراد کو زندہ جلانے والے 42ملزمان پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالت میں یوحنا آباد میں دو افراد کو زندہ جلا کر ہلاک کرنے کے کیس میں ملوث بیالیس ملزمان پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی۔ انسداد دہشت گردی کی عدالت میں نشترکالونی پولیس نے یوحنا آباد میں دو ہنگامہ آرائی کے دوران دو افراد نعیم اور بابر کو ہلاک کرنے کے الزام میں ساجد سمیت بیالیس ملزمان کا چالان پیش کررکھا ہے عدالت میں چالان آنے پر فاضل جج نے ملزمان کو فرد جرم کے لئے گزشتہ روزطلب کیا تھا عدالت میں ملزمان پیش ہوئے دوملزمان ساجد اور فیصل جاوید کے وکیل طاہر بشیر نے فیصل اور ساجد کی عمر کو چیلنج کردیا ،عدالت میں درخواست دی کہ دونوں ملزمان پر فردجرم عائد نہیں ہوسکتی ان کی عمریں کم ہیں ان کا کیس عام ملزموں کے کیس سے الگ کیا جائے درخواست آنے پر فاضل جج نے طاہربشیر ایڈووکیٹ اور پراسکیوٹرکو 30 جون کو عدالت میں بحث کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4