نیشنل بینک اور واپڈا میں نیلم جہلم ہائیڈرو پروجیکٹ کے لئے قرضے کی فراہمی کا معاہدہ

نیشنل بینک اور واپڈا میں نیلم جہلم ہائیڈرو پروجیکٹ کے لئے قرضے کی فراہمی کا ...

لاہور(کامرس رپورٹر) ملک میں بجلی کی ضرورت کو پورا کرنے کے لئے نیشنل بینک اور واپڈا کے درمیان نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پروجیکٹ کے لئے 100 ارب روپے قرضے کی فراہمی کے لئے یادداشت پر دستخط ہو گئے۔ نیشنل بینک آف پاکستان کے صدر اور چیف ایگزیکٹو آفیسر سید اقبال اشرف اور چیئرمین واپڈا ظفر محمود کے درمیان یادداشت پر دستخط کے مطابق نیشنل بینک ملک کے 16 بینکوں کے اشتراک سے نیلم جہلم ہائیڈرو پروجیکٹ کی تکمیل کے لئے 100 ارب روپے فراہم کرے گا۔ یادداشت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر نیشنل بینک آف پاکستان نے کہا کہ صکوک 10 سالہ مدت کے لئے بنائے گئے ہیں جس کی خود مختار ضمانت حکومت پاکستان نے لی ہے، اس صکوک کی JCR-VIS سے بنیادی ریٹنگ ’’AAA‘‘ ہے اور یہ توقع کی جا رہی ہے کہ اس سے وسیع بنیادوں پر پاکستان کی مارکیٹ پر اثر پڑے گا جس سے فنڈنگ فارمیٹ کے اضافے میں مدد ملے گی اور کم مدت کی چھوٹی ڈیلز کو بڑھانے پر مجبور کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ لیکیویڈ فنڈز کے قابل تجارت جی او پی گارنٹیڈ اسلامک انسٹرومنٹ میں سرمایہ کاری کے لئے صکوک اسلامی بینکس اور میچوں فنڈز کے لئے راہیں فراہم کرے گا ۔انہوں نے کہا کہ نیلم جہلم پروجیکٹ ایک ہائیڈرو پاور فیسلیٹی ہے جس میں سرنگوں کے ذریعے دریائے نیلم کے پانی کا رخ بدلا جاتا ہے جو بجلی پیدا کرنے کی طاقت پیدا کرنے کے بعد دریائے نیلم میں جا گرتا ہے اس کی تکمیل سے سالانہ 5.15 بلین یونٹس بجلی کی پیداوار ممکن ہو سکے گی، اس گرین انرجی سے واپڈا کو موجودہ ٹیرف کے مقابلے میں سالانہ 50 بلین روپے کا کل ریونیو حاصل ہو گا۔

، یہ پروجیکٹ جولائی 2017ء کے اختتام تک مکمل ہو جائے گا۔ واپڈا کے چیئرمین چیئرمین واپڈا ظفر محمود نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں یہ کسی بھی سرکاری شعبے کے منصوبے کے لئے کسی مقامی بینک سے لیا جانے والا آج تک کا سب سے بڑا سرمایہ ہے، یہ تاریخی سنگ میل نہ صرف وفاقی حکومت اور واپڈا پر سرمایہ کاروں کے اعتماد کو ظاہر کرتا ہے بلکہ سرمایہ کاری کے ان امکانات کی نشاندہی بھی کرتا ہے جو ہائیڈرو پاور سیکٹر ملک میں پیش کر رہا ہے۔ انہوں نے وزیراعظم، وفاقی وزیر پانی و بجلی اور وفاقی وزیر مالیات کا نیلم جہلم ہائیڈرو پاور کے لئے ریکارڈ سرمائے کا انتظام کرنے میں ان کی رہنمائی اور مسلسل معاونت کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ جہلم ہائیڈرو پاور کے لئے 100 بلین روپے مالیت کے صکوک کا اجراء مستقبل قریب ملک کے بنائے جانے والے دیگر ہائیڈرو پاور پروجیکٹس کے لئے فنڈز کا انتظام کرنے میں بھی خاطر خواہ معاون ثابت ہو گا۔ چیئرمین واپڈا نے کہا کہ نیلم جہلم ہائیڈور پاور پروجیکٹ ایک عالمی سطح کی زیر زمین پاور جنریشن فیسلیٹی ہے جو آزاد جموں و کشمیر میں دریائے نیلم پر قائم کی گئی ہے، پروجیکٹ کا 90 فیصد تعمیراتی کام بلند و بالا پہاڑوں تلے اور صرف 10 فیصد کام سطح پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ پروجیکٹ پر تعمیراتی کام اچھی رفتار سے آگے بڑھ رہا ہے اور اب تک مجموعی طور پر پروجیکٹ کا 82 فیصد کام مکمل ہو چکا ہے، برمحل مالی انتظام کاری کی بدولت واپڈا پراعتماد ہے کہ پروجیکٹ کا پہلا یونٹ جولائی 2017ء میں حوالے کر دے اور بعد ازاں دیگر 3 یونٹس بھی دسمبر 2017ء کے اختتام تک مکمل کر لے۔ چیئرمین واپڈا نے مزید کہا کہ اپنی تکمیل کے بعد یہ پروجیکٹ نیشنل گرڈ میں سالانہ 5.15 بلین یونٹس بجلی کا حصہ ملائے گا۔تقریب میں رکن فنانس واپڈا انوار الحق، چیف ایگزیکٹو آفیسر جنرل (ر) محمد زبیر نیلم جہلم ہائیڈرو پاور کمپنی (پرائیوٹ) لمیٹڈ کے ساتھ تمام 16 شریک مالیاتی اداروں کے سینئر حکام اور صدور شریک تھے۔

مزید : کامرس