قندیل بلوچ نے شناختی کارڈ ملتان سے بنوایا ‘ نام فوزیہ عظیم درج ‘ نادرا کی تصدیق

قندیل بلوچ نے شناختی کارڈ ملتان سے بنوایا ‘ نام فوزیہ عظیم درج ‘ نادرا کی ...
قندیل بلوچ نے شناختی کارڈ ملتان سے بنوایا ‘ نام فوزیہ عظیم درج ‘ نادرا کی تصدیق

  

ملتان(نمائندہ خصوصی)فلم انڈسٹری،ماڈلنگ کی اداکارہ فوزہ عظیم المعروف قندیل بلوچ کے بارے میں مزید انکشاف ہوا ہے قندیل بلوچ نے یکم مارچ1990میں شاہ صدر دین کی بستی ماہڑہ کے ایک کچے مکان میں میں آنکھ کھولی۔ماڈلنگ کی دنیا میں قدم جمانے کے بعد یکم جون2012ءکو اس نے اپنا نیا پاسپورٹ حاصل کیا جو کہ 31مئی2017ءتک کارآمد ہے۔اس پاسپورٹ کے حصول کیلئے فوزیہ المعروف قندیل بلوچ نے اپنا شناختی کارڈ ملتان سے بنوایا۔جس کا نمبر36302-7966998-2 ہے جبکہ پاسپورٹ نمبرB7282004جاری ہوا۔قندیل بلوچ کہلانے والی اس اداکارہ کا نام شناختی کارڈ اور پاسپورٹ پر فوزیہ عظیم ہی درج ہے جبکہ والد کا نام محمد عظیم ہے۔جب اس شناختی کارڈ کا ریکارڈ کانادرا کی ہیلپ لائن8300 کے ذریعہ چیک کیا گیا تو نادرا کی ہیلپ لائن نے پاکستان کی خبر کی تصدیق کی۔نادرا ریکارڈ کے مطابق فوزیہ عظیم المعروف قندیل بلوچ کا سلسلہ یا ووٹر نمبر251،بلاک کوڈ نمبر 224030806،وارڈ نمبر6ٹھڈی،یونین کونسل نمبر29،چک رائمن،ضلع کونسل ڈیرہ غازی خان،پولنگ اسٹیشن،گورنمنٹ بوائز پرائمری سکول ٹھڈی حصہ دوئم ڈیرہ غازی خان ہے۔معلوم ہوا ہے فوزیہ عظیم المعروف قندیل بلوچ ماڈلنگ کی دنیا میں قدم رکھنے کے بعد صرف3 مرتبہ اپنے آبائی گھر گئی۔اسکی علاقے میں آمد کی خبر سن کر بستی ماہڑہ کے مکین بے تاب ہوجاتے ہیں لیکن تصویر کا دوسرا عکس بہت تلخ ہے فوزیہ نے اپنے والدین کو جنوبی پنجاب کے اس پس ماندہ علاقے سے نکالنا گوارا کیا اور نہ اپنے بھائیوں کی تعلیم پر توجہ دی۔فوزیہ عظیم سے قندیل بلوچ بننے کے بعد گورنمنٹ پرائمری سکول بستی ماہڑہ میں اس کے چرچے عام ہیں۔اپنے گھر سے فرار ہونے کے بعد فوزیہ عظیم نے ملتان میں بھی رہائش اختیار رکھی۔اس دوران اس نے اپنا شناختی کارڈ ملتان سے بنوایا۔اس پر مستقل پتہ ڈیرہ غازی خان اور عارضی پتہ ملتان کا درج ہے۔معلوم ہوا ہے کہ قندیل بلوچ کا ملتان کینٹ کے ایریا میں کوئی اپارٹمنٹ نہیں ہے بلکہ بستی خداد داد کے نزدیک القریش ہاو¿سنگ سکیم میں رہائش پذیر رہی کینٹ ایریا میں رہائش کا بیان صرف سستی شہرت حاصل کرنے کیلئے دیا گیا ہے۔قندیل بلوچ اپنے بولڈ سین اور متنازعہ بیانات کیوجہ سے میڈیا کیلئے تو ہاٹ کیک ثابت ہوئی لیکن اس کا سب سے برا اثر قندیل بلوچ کے خاندان اور ذات پر پڑرہا ہے جبکہ اس کے ایک بھائی اپنے بہن کی جانب سے ماڈلنگ کی دنیا میں آنے کے بعد لاتعلقی اختیار کررکھی ہے جبکہ خاندان کے دوسرے لوگ فوزیہ عظیم سے قندیل بلوچ تک کا سفر کرنے والی اس لڑکی کی شکل تک دیکھنا گوارا نہیں کرتے اور اسے ماہڑہ فیملی کی بدنامی کا باعث قرار دیتے ہیں۔دوسری جانب شاہ صدر دین کے منچلے قندیل بلوچ کو ماڈلنگ کی دنیا کی ڈریم گرل تو سمجھتے ہیں لیکن ان کے نزدیک فوزیہ عظیم آج بھی ان کی فوزی ہے یہ نک نیم فوزیہ عظیم شاہ صدر دین کے چاہنے والوں نے بچپن میں ہی دے دیا تھا۔

قندیل بلوچ

مزید : ملتان