انتخابی ٹکٹ پارلیمانی بورڈ کی سفارشات پر جاری کرینگے : شہباز شریف

انتخابی ٹکٹ پارلیمانی بورڈ کی سفارشات پر جاری کرینگے : شہباز شریف

لاہور(جنرل رپورٹر،نیوز ایجنسیاں،مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم لیگ (ن)کے صدر میاں شہباز شریف نے کہا ہے کہ ٹکٹ ہر صورت صرف اور صرف میرٹ پر دیے جائیں گے،ٹکٹوں کی تقسیم کے حوالے سے پارلیمانی بورڈ نے تمام امیدواروں کے انٹرویو کیے ہیں اور اس حوالے سے بورڈ کی سفارشات موجود ہیں لہٰذاشفافیت کو یقینی بنانے کیلئے پارلیمانی بورڈ کی سفارشات کی روشنی میں ہی ٹکٹ جاری کیے جائیں گے، میرٹ، پارٹی ڈسپلن اور مسلم لیگ (ن) کے ساتھ وفاداری کو ترجیح دی جائے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے عام انتخابات کیلئے ٹکٹوں کی تقسیم اور امیدواروں کی فہرستوں کو حتمی شکل دینے کیلئے مختلف صوبوں اور پنجاب کے مختلف اضلاع کے رہنماؤں کے ساتھ مشاورتی سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ عمران نیازی اور آصف زرداری کی نااہلی اور نالائقی کی وجہ سے کے پی اور سندھ کے عوام نے انہیں مسترد کردیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے عوام کی خدمت کی ہے ہماری کارکردگی عوام کے سامنے ہے۔ پی ٹی آئی کے پاس دکھانے کو کچھ نہیں۔ شہباز شریف نے کہا کہ ہماری حکومت کی وفاق اور پنجاب میں بہترین کارکردگی آئندہ الیکشن میں ہماری کامیابی کی دلیل بنے گی اورمسلم لیگ ن چاروں صوبوں سے جیتے گی۔ اجلاس میں شہباز شریف کے آئندہ دورہ کراچی کے حوالے سے بھی مشاورت کی گئی۔شہبازشریف نے اجلاس میں موجود رہنماؤں کو بیگم کلثوم نواز کی صحت کے حوالے سے بھی بتایا اور ان کی دعاؤں پر شکریہ ادا کیا۔قبل ازیں مسلم لیگ (ن)کے صدر شہباز شریف نے لندن سے لاہور واپسی کے بعد زعیم قادری کی بغاوت کے بعد پیدا ہونے والی صورت حال پرپارٹی اراکین سے طویل مشاورت ،عوام رابطہ مہم اور ٹکٹوں کے حوالے سے آئندہ کی حکمت عملی بنائی گئی ۔دریں اثناء میاں شہباز شریف سے خواجہ سعد رفیق اور رانا مشہود احمد نے ملاقات کر کے ناراض رہنما زعیم حسین قادری سے ہونے والی ملاقات بارے تفصیلی آگاہ کیا ۔ذرائع کے مطابق شہباز شریف نے پارٹی رہنماؤں سے گفتگو کے دوران زعیم حسین قادری کی انتہائی سخت پریس کانفرنس کے باوجود برد باری اور تحمل کا مظاہرہ کیا ۔ شہباز شریف نے کہا کہ زعیم قادری مخلص کارکن اور مشکل وقت کے ساتھی ہیں ۔ میرے دل میں ان کے لئے نرم گوشہ ہے ، بیشک انہوں نے پریس کانفرنس میں بہت تلخ باتیں کی ہیں لیکن اگر انہیں اپنی غلطی کا احساس ہو جائے تو گلے لگانے کے لئے تیار ہوں۔علاوہ ازیں مسلم لیگ ( ن ) کے صدر محمدشہباز شریف سے سرگودھا کے رہنماؤں کی ملاقات کی۔جس میں سرگودھا کی سیاسی سر گرمیوں اور آئندہ کی حکمت عملی ترتیب دی گئی، ملاقات کرنے والوں میں لیگی رہنماء پیر امین الحسنات اور پیر فاروق شاہ شامل تھے۔بعدازاں میاں شہباز شریف سے مسلم لیگ ( ن ) سندھ کے رہنما شاہ محمدشاہ نے ملاقات کی۔ سینئررہنماء سلیم ضیاء بھی ان کے ہمراہ تھے،ملاقات میں سندھ کی انتخابی مہم بالخصوص کراچی کی موجودہ انتخابی صورت حال پر بات چیت ہوئی دوسری جانب مسلم لیگ (ن) کے باغی رہنماء سید زعیم حسین قادری نے مسلم لیگ (ن) سے متعلق اپنے فیصلہ پر نظرثانی نہ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ آزاد حیثیت میں لاہور سے قومی اسمبلی کا الیکشن لڑنے کا فیصلہ حتمی ہے، تحریک انصاف میں شامل نہیں ہوں گا۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے زعیم حسین قادری کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف اور میرے درمیان کوئی رابطہ نہیں ہوا، میں مسلم لیگ (ن) کے حوالے سے اپنے فیصلے پر نظرثانی نہیں کروں گا۔ جب میں نے فیصلہ تبدیل نہیں کرنا تو رابطوں کی کوئی اہمیت اور ضرورت نہیں۔انہوں نے کہا کہ آزاد حیثیت میں قومی اسمبلی کا انتخاب لڑنے کا فیصلہ حتمی ہے۔پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کی دعوت قبول کرنے سے متعلق سوال پر زعیم قادری نے کہا کہ میں پی ٹی آئی میں شامل نہیں ہوں گا، میں اپنی جگہ پر مضبوطی سے کھڑا ہوں۔ زعیم حسین قادری نے کہا کہ چودھری نثار میرے بڑے بھائی اور قابل احترام ہیں، میرا ان سے تعلق سیاست سے بھی پہلے کا ہے اور میں ان کی صف میں بالکل شامل ہوسکتا ہوں لیکن میرا ان سے بھی اب تک کوئی رابطہ نہیں ہوا۔انہوں نے کہا کہ چودھری نثار کوئی آزاد گروپ نہیں بنائیں گے، میں بھی اس وقت کوئی آزاد گروپ بنانے کا ارادہ نہیں رکھتا لیکن عام انتخابات کے بعد آزاد گروپ بناؤں گا۔انہوں نے مزید کہا کہ معاملہ ٹکٹ ملنے کا نہیں، اصول پر اٹل فیصلہ کیا، پارلیمانی بورڈ نے کارکنوں سے بہت ناانصافی کی، ارکان نے اپنے رشتہ داروں کو نامزد کر دیا۔

شہباز،زعیم

مزید : صفحہ اول