انتخابات 2018ء عمران خان ، مریم نواز ، ایاز صادق ، علیم خان ، خواجہ آصف اور فردوس عاشق کیخلاف اپلیں دائر

انتخابات 2018ء عمران خان ، مریم نواز ، ایاز صادق ، علیم خان ، خواجہ آصف اور ...

ٍٍٍٍ لاہور(نامہ نگار خصوصی )تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان،مریم نواز ،سردار ایاز صادق ،پرویز ملک عبدالعلیم خان،خواجہ آصف، فردوس عا شق اعوان کو عام انتخابات میں حصہ لینے سے روکنے کیلئے لاہور ہائیکورٹ کے الیکشن اپیلٹ ٹربیونلز میں اپیلیں دائر کردی گئیں جبکہ عمران خان نے اپنے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کے فیصلہ کو چیلنج کر دیا ،ریٹرننگ آفیسرز کے فیصلوں کے خلاف اپیلیں دائر کرنے کی معیاد ختم ہوگئی ۔تفصیلات کے مطابق کاغذات نامزدگی مسترد یا منظور کرنے کے آخری روز جہاں عمران خان نے میانوالی کے حلقہ این اے 95 سے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کے فیصلہ کو چیلنج کیا اور استدعا کی کہ ریٹرننگ آفیسر کے فیصلے کو کالعدم قرار دیا جائے.دوسری جانب سابق چیف جسٹس پاکستان کی جماعت جسٹس اینڈ ڈیمویٹک پارٹی کے امیدوار مدثر حسین نے عمران خان کے لاہور کے حلقہ این اے 131 سے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کیخلاف اپیل دائر کی جس میں دعویٰ کیا کہ کاغذات نامزدگی میں عمران خان نے اپنے دو بیٹوں کو ظاہر کیا جبکہ بیٹی کے بارے میں تفصیلات فراہم نہیں کی گئیں، اس لئے کاغذات نامزدگی کو منظور کرنے کو کالعدم قرار دیا جائے، عمران خان کے کاغذات نامزدگی مسترد اور منظور کرنے کیخلاف الگ الگ اپیلوں پر سماعت لاہور ہائیکورٹ کے ججز پر مشتمل اپیلٹ ٹربیونل کے روبرو ہوگی۔تحریک انصاف کے مرکزی رہنما عبدالعلیم خان کے کاغذات نامزدگی کی منظوری کو ایپلٹ ٹربیونل میں چیلنج کردیا گیا یہ اپیل پیپلزپارٹی کے حلقہ این اے 129 سے امیدوار افتخار شاہد نے دائر کی ،عبدالعلیم خان نے حلقہ این اے 122 سے 2015 میں ضمنی الیکشن لڑا ضمنی الیکشن کاغذات نامزدگی میں اپنی آف شور کمپنیوں کو چھپایا تھا،عبدالعلیم خان نے ان آف شور کمپنیوں کو موجودہ کاغذات نامزدگی میں ظاہر کیا ہے علیم خان نے اپنی آمدنی اور اثاثے کاغذات نامزدگی میں ظاہر نہیں کئے۔نیب بھی عبدالعلیم خان کے خلاف مالی بے ضابطگیوں کے حوالے سے تحقیقات کررہا ہے۔سابق وزیر خارجہ خواجہ محمد آصف کے حلقہ این اے 73 سیالکوٹ سے کاغذات نامزدگی منظوری کے خلاف اپیل دائر کردی گئی ،یہ اپیل سرمد حنیف نے ایم اظہر چودھری ایڈووکیٹ کے توسط سے دائر کی ،جس میں کہا گیا ہے کہ خواجہ آصف نے اپنے اثاثے کاغذات نامزدگی میں درست ظاہر نہیں کئے،ریٹرننگ افسر نے فراہم کئے گئے ثبوت نظر انداز کرکے کاغذات نامزدگی منظور کئے۔دریں اثنا ٹربیونل نے حلقہ این اے 90پی ٹی آئی کی امیدوار ڈاکٹر نادیہ عزیز کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کے خلاف اپیل خارج کردی ۔الیکشن ٹربیونل نے اپیل خارج کرتے ہوئے نادیہ عزیز کو الیکشن لڑنے کی اجازت کے آر او کے فیصلے کو برقرار رکھا،جسٹس فیصل زمان پر مشتمل الیکشن اپیلٹ ٹربیونل نے عمر فاروق کی اپیل پر سماعت کی جس میں کہا گیا کہ ڈاکٹر نادیہ عزیز وائس چیئر پرسن پی ایچ اے رہ چکی ہیں ،ڈاکٹر نادیہ کے وکیل نے ٹربیونل کو بتایا کہ وائس چیئر پرسن کا عہدہ سرکاری نہیں،اعزازی ہے ،پاکستان ۔تحریک انصاف کی رہنما ڈاکٹر یاسمین راشد نے حلقہ این اے 125 سے مریم نواز کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کے خلاف اپیل کر دی جس میں کہا گیا ہے کہ ریٹرننگ افسر نے مریم نواز کے کاغذات نامزدگی حقائق کے برعکس منظور کئے۔مریم نواز نے کاغذات نامزدگی میں اپنے مکمل اثاثے ظاہر نہیں کئے اس لئے مریم نواز آئین کے آرٹیکل 62،63پر پورا نہیں اترتی ہیں،کاغذات نامزدگی میں زرعی زمین سے حاصل ہونے والی آمدنی کا ذکر نہیں کیا گیا۔الیکشن ٹربیونلز کے روبرو مسلم لیگ (ن) کے ایاز صادق اور پرویز ملک کے کاغذات نامزدگی کو بھی چیلنج کر دیا گیا ہے ،اس سلسلے میں دائر اپیلوں میں کہا گیا ہے کہ ریٹرننگ آفیسر نے ایاز صادق اور پرویز ملک کے کاغذات نامزدگی حقائق کے برعکس منظور کئے،ایاز صادق اور پرویز ملک نے کاغذات نامزدگی میں مکمل اثاثہ جات ظاہر نہیں کئے، دونوں امیدوار نے کاغذات نامزدگی میں اپنے بیوی بچوں کے اثاثہ جات کی تفصیلات بھی ظاہر نہیں کیں۔امیدواروں نے کاغذات نامزدگی میں قرضوں کے متعلق بھی تفصیلات فراہم نہیں کیں اس لئے دونوں امیدوار آرٹیکل 62،63 پر پورا نہیں اترتے۔ لاہور ہائیکورٹ کے اپیلٹ ٹربیونل نے پاکستان تحریک انصاف کی امیدوار خاتون منزہ حسن کے کاغذات نامزدگی منظور ہونے کے خلاف اپیل پر پاکستان تحریک انصاف کی رکن ڈاکٹر زرقا سے منزہ حسن کے اثاثہ جات سے متعلق تصدیق شدہ دستاویزات طلب کر لیں ۔پی ٹی آئی کی ڈاکٹر زرقا نے اپنی کی پارٹی کی امیدوار منزہ حسن کے خلاف اپیل دائر کر رکھی ہے ۔لاہور ہائیکورٹ کے اپیلٹ ٹربیونل کے جج جسٹس فیصل زمان خان نے پی ٹی آئی کی ڈاکٹر زرقا کی اپیل پر سماعت کی اپیل کنندہ کے وکیل نے عدالت کے روبرو موقف اختیار کیا کہ پی ٹی آئی کی جانب سے منزہ حسن کو مخصوص سیٹ پر الیکشن لڑنے کیلئے ٹکٹ دیا گیا ۔وکیل نے الزام لگایا کہ ریٹرننگ افسر نے منزہ حسن کے کاغذات نامزدگی حقائق کے برعکس منظور کئے، اپیل کنندہ کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ منزہ حسن دُہری شہریت کی حامل ہیں اورمنزہ حسین نے کاغذات نامزدگی میں اصل اثاثے ظاہر نہیں کئے جس کے باعث منزہ حسن 62، 63 پر پوری نہیں اترتی ہے ۔اپیل کنندہ کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ اپیلٹ ٹربیونل منزہ حسن کے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کا حکم دے کر الیکشن لڑنے سے روکنے کے احکامات جاری کرے ،ڈاکٹر زرقا کے وکیل کی جانب سے منزہ حسن کے ان اثاثہ جات کی تفصیلات عدالت میں پیش کی گئیں جنہیں مبینہ طور پر کاغذات نامزدگی میں ظاہر نہیں کیا گیا ۔عدالت نے اپیل کنندہ سے مشکوک اثاثہ جات کی تصدیق شدہ دستاویزات عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی ۔لاہور ہائیکورٹ سابق وفاقی وزیر اور تحریک انصاف کی امیدوار فردوس عاشق اعوان کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کے خلاف اپیل پر فریقین کو نوٹس جاری کر دئیے ۔لاہور ہائیکورٹ کے اپیلٹ ٹربیونل نے حلقہ این اے 72 کے ووٹر زید لطیف کی اپیل پر سماعت کی جس میں فردوس عاشق اعوان کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کے فیصلے کو چیلنج کیا گیا۔ اپیل میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ فردوس عاشق اعوان نے کاغذات نامزدگی میں مطلوبہ معلومات کی تفصیلات فراہم نہیں کیں اور حقائق چھپائے ۔ اپیل میں نشاندہی کی گئی کہ ریٹرننگ آفیسر نے فردوس عاشق اعوان کے خلاف اعتراضات کو نظر انداز کیا اور شنوائی کے بغیر ہی کاغذات نامزدگی منظور کر لئے۔ اپیل کنندہ نے استدعا کی کہ فردوس عاشق اعوان کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے جسٹس شہباز علی رضوی پر مشتمل اپیلٹ ٹربیونل نے اپیل پر کارروائی کرتے ہوئے تحریک انصاف کی امیدوار فردوس عاشق اعوان سمیت دیگر فریقین کو نوٹس جاری کر دئیے۔الیکشن ٹربیونل کے روبرو نجم سیٹھی کی اہلیہ جگنو محسن کے کاغذات نامزدگی کو بھی چیلنج کیا گیا ہے ،اس سلسلے میں دائر اپیل پر فاضل ٹربیونل نے جگنو محسن اور دیگر مدعا علیہان کو 25جون کیلئے نوٹس جاری کردیئے ہیں۔اپیل میں کہا گیا ہے کہ جگنو محسن نے اپنے کاغذات نامزدگی میں اپنے شوہر اور اپنی گاڑیوں سمیت متعدد اثاثے چھپائے۔ٹربیونل نے جھنگ سے وقاص اکرم شیخ کے کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف ان کی اپیل کی سماعت مکمل کرکے فیصلہ محفوظ کرلیا۔ وقاص اکرم شیخ کا موقف ہے کہ ریٹرننگ آفیسر نے حقائق کے برعکس ان کے کاغذات نامزدگی مسترد کئے۔لاہور ہائیکورٹ کے ایپلیٹ ٹربیونل نے پی پی 32 سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار میاں طارق محمودکے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کے خلاف اپیل پر نوٹس جاری کرتے ہوئے الیکشن کمیشن اور سابق ایم پی اے میاں طارق محمود سے جواب طلب کر لیا ہے۔علی عاصم کی طرف سے موقف اختیار کیا گیا ہے کہ ن لیگی سابق ایم پی اے میاں طارق محمود سپین میں ملازمت کر رہا ہے اور طارق محمود سپین سے باراٹنڈنٹ کے طورپر تنخواہ بھی وصول کر رہا ہے۔اپیل کنندہ نے نشاندہی کی کہ ریٹرننگ آفیسر نے حقائق کے برعکس ن لیگی سابق ایم پی اے کے کاغذات نامزدگی منظور کیے ۔لاہور ہائیکورٹ کے اپیلٹ ٹربیونل نے حلقہ این اے 127سے پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار جمشید اقبال چیمہ کے کاغذات منظور ہونے کے خلاف اپیل پر نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا ہے ۔اپیل کنندہ سعید رضا کی درخواست پر سماعت کی۔ اپیل کنندہ کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ جمشید اقبال چیمہ کے کاغذات نامزدگی تصدیق شدہ نہیں کیونکہ جمشید اقبال چیمہ ایک کروڑ 25 لاکھ43 ہزار روپے کے نادہندہ ہیں.ا۔درخواست گزار کے وکیل نے نشاندہی کی کہ جمشید اقبال چیمہ آئین کے آرٹیکل 62 ،63پر پورا نہیں اترتے ہیں ۔پی پی107سے زاہدمحمودگورائیہ کے کاغذات کی منظوری کے خلاف ہائیکور ٹ سے رجوع کیا گیاہے،ٹریبونل کاالیکشن کمیشن اورزاہدمحمودگورائیہ سمیت دیگرکو25جون کیلئے نوٹس جاری کردئیے گئے ،درخواست گزار کے مطابق زاہدمحمودگورائیہ نے کاغذات نامزدگی میں اثاثہ جات چھپائے۔

اپیلیں دائر

اسلام آباد/کراچی/راولپنڈی(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں) شاہد خاقان عباسی،عمران خان سردار مہتاب عباسی، عائشہ گلا لئی اور فاروق ستارنے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کیخلاف اپیلٹ ٹریبونل سے رجوع کر لیا،چودھری نثار کے کاغذات نامزدگی منظور کئے جانے کے خلاف درخواستیں مسترد کر دی گئیں، این اے 243میں عمران خان کے کاغذات نامزدگی کو الیکشن ٹریبونل میں چیلنج کردیا گیا۔تفصیلات کے مطابق شاہد خاقان عباسی نے اپنے وکیل کے ذریعے سے کاغذات نامزدگی مسترد کئے جانے کے فیصلے کو چیلنج کرتے ہوئے استدعا کی ہے کہ ریٹرننگ افسر کے فیصلے کو کالعدم قرار دیتے ہوئے این اے 53 اسلام آباد سے الیکشن لڑنے کی اجازت دی جائے۔سردار مہتاب عباسی اور عائشہ گلالئی نے این اے 53میں ریٹرننگ افسر کے فیصلے ک خلاف درخواست دائر کردی۔درخواست میں ریٹرننگ افسر کے فیصلے کو کالعدم قرار دینے کی ا ستدعا کی گئی ۔ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما ڈاکٹر فاروق ستار نے این اے245 کیلئے جمع کرائے گئے کاغذات مسترد کئے جانے کے فیصلہ کے خلاف الیکشن ٹریبونل سے رجوع کر لیا ۔ این اے 243 سے عمران خان کے منظور ہونے والے کاغذات نامزدگی کو الیکشن ٹریبونل میں چیلنج کردیا گیا۔جاوید راں ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ عمران خان نے کاغذات نامزدگی پر خود دستخط نہیں کئے لہٰذا ریٹرننگ افسر کا فیصلہ غیر قانونی قرار دے کر عمران خان کے کاغذات نامزدگی کی منظوری کو کالعدم قراردیا جائے۔ اپیلیٹ ٹریبونل نے چودھری نثار کے کاغذات نامزدگی منظور کئے جانے کے خلاف درخواستیں مسترد کر تے ہوئے کہا ہے کہ سپریم کورٹ پر حملے میں چودھری نثار کے ملوث ہونے کے کوئی ثبوت فراہم نہیں کئے گئے ۔

فیصلے چیلنج

مزید : صفحہ اول