خورشیدشاہ ، مراد شاہ ، ایازصادق کروڑ پتی ، صفدر کی 3100کنال زرعی اراضی

خورشیدشاہ ، مراد شاہ ، ایازصادق کروڑ پتی ، صفدر کی 3100کنال زرعی اراضی

سکھر، اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک،این این آئی) قومی اسمبلی میں سابق قائد حزب اختلاف خورشید شاہ اور سابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کے کاغذات نامزدگی میں ظاہر کردہ اثاثوں کی تفصیلات سامنے آگئی۔دونوں رہنماؤں کا تعلق پیپلز پارٹی سے ہے اور انہوں نے کروڑوں روپے کے اثاثے ظاہر کیے ہیں۔ دستاویزات کے مطابق خورشید شاہ کے مجموعی اثاثے 3کروڑ،59 لاکھ، 15ہزار 359 روپے کے ہیں، ان کے پاس ریجنٹ کے علاقے میں 3 لاکھ 10 ہزار روپے کا گھر ہے جب کہ وہ میمن سوسائٹی میں 20 لاکھ روپے مالیت کے پلاٹ کے مالک بھی ہیں۔خورشید شاہ نے دستاویزات میں اسلام آباد میں 2 پلاٹوں کی ملکیت ظاہر کی ہے اور ان کا ایک کینال کا پلاٹ 55 لاکھ اور دوسرا 8 لاکھ روپے کا ہے۔ سابق اپوزیشن لیڈر نے گھوسری میں 20 اور 3 ایکڑ زمین 26 لاکھ 86 ہزار 76 روپے مالیت کی ظاہر کی جب کہ کوٹری میں 100 ایکڑ زرعی زمین 16 لاکھ روپے مالیت کی ہے۔خورشید شاہ نے اپنے کاغذات نامزدگی فارم میں نارا کاٹن فیکڑی میں 21 لاکھ روپے مالیت کے 25 فیصد شیئرز بھی ظاہر کیے ہیں۔ سابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے اپنے کاغذات نامزدگی میں اثاثوں کی مد میں 21 کروڑ 39 لاکھ 18 ہزار 499 روپے ظاہر کیے ہیں۔ مراد علی شاہ ڈی ایچ اے کراچی میں ایک کروڑ 15 لاکھ روپے کے بنگلے کے مالک ہیں جب کہ انہوں نے اثاثوں میں مختلف مقامات پر 51 ایکڑ زرعی اراضی بھی ظاہر کی ہے۔دستاویزات کے مطابق مراد علی شاہ نے 10 تولے زیوارت بھی اپنے اثاثوں میں ظاہر کیے جب کہ ان کے پاس 22 لاکھ اور ایک کروڑ 20 لاکھ روپے کی 2 گاڑیاں ہیں۔مراد علی شاہ کے پاس بینک میں 2 لاکھ 64 ہزار 368 ڈالرز بھی ہیں، اس کے علاوہ 275 ایکڑ پر محیط ایک ٹرسٹ بھی ان کی ملکیت میں شامل ہے۔سابق وزیر دفاع خرم دستگیر نے دستاویزات میں اپنے اثاثوں کی مالیت ایک کروڑ 28 لاکھ روپے بتائی ہے، ان کے 2 بینک اکاؤنٹس میں 37 لاکھ 39 ہزار روپے ہیں جب کہ خرم دستگیر ایک کار اور 200 گرام سونے کے بھی مالک ہیں۔سابق وزیر دفاع سیالکوٹی دروازے کے قریب سینما کے ایک تہائی حصے دار ہیں، وہ جی ٹی روڈ پر واقع کلاتھ مارکیٹ میں بھی ایک تہائی حصے کے مالک ہیں۔دستاویزات کے مطابق خرم دستگیر کو سیٹلائٹ ٹاؤن میں واقع گھر والد کی طرف سے بطور تحفہ ملا، ان کو ڈی سی کالونی میں بیوی کی طرف سے پلاٹ بھی بطور تحفہ ملا۔

اثاثے

لاہور(نامہ نگار )غریب عوام کے امیر نمائندوں کے اثاثوں کی مزیدتفصیلات سامنے آگئیں ۔پاکستان تحریک انصاف کے راہنما عبدالعلیم خان کل اثاثوں کی مالیت 91 کروڑ 82 لاکھ 78 ہزار 855 روپے ہے،وہ ایک ارب 21کروڑ روپے کے مقروض بھی ہیں ۔مسلم لیگ (ن) کے رہنما سردار ایاز صادق کے اثاثوں کل اثاثوں کی مالیت 4 کروڑ 47 لاکھ 95 ہزار نو سو چودہ روپے ہے ۔گزشتہ مالی سال تک ان اثاثوں کی مالیت 4 کروڑ 23 لاکھ 39 ہزار 280 روپے تھی۔سابق وزیر اعظم کے داماد کیپٹن (ر)صفدر کے اثاثوں کی کل مالیت 4 کروڑ 14 لاکھ روپے ہے۔وہ راجن پور میں 2922 کنال زرعی اراضی کے مالک ہیں جبکہ مانسہرہ میں ان کی 172 کنال اراضی بھی موجود ہے ۔کاغذات نامزدگی کے ساتھ فراہم کی گئی تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے رہنما عبدالعلیم خان کل اثاثوں کی مالیت 91 کروڑ 82 لاکھ 78 ہزار 855 روپے ہے،ان کی ذاتی پراپرٹی کی مالیت 15 کروڑ 92 لاکھ 75 ہزار 737 روپے ہے جبکہ ایک ارب سے زائد کے مقروض بھی ہیں،ان کا پاکستان میں صرف 90 ہزار روپے کا کاروبار ہے ،اس کے ساتھ ساتھ بیرون ملک کاروبار میں سرمایہ کاری 81 لاکھ 38 ہزار 5 روپے، لاکھوں شیرز کی مالیت 12 کروڑ 93 لاکھ 53 ہزار 990 روپے ہے۔تفصیلات کے مطابق حلقہ این اے 129 سے پی ٹی آئی کے امیدوارعبدالعلیم خان نے اپنے کاغذات نامزدگی میں اثاثہ جات ڈکلیر کردیئے ہیں۔عبدالعلیم خان پاکستان میں 43 جبکہ بیرون ملک 3 کمپنیاں رجسٹرڈ ہیں یہ سب اثاثے رکھنے کے باوجود علیم خان ایک ارب 21 کروڑ 86 لاکھ 32 ہزار 281 روپے کے مقروض ہیں۔ 3 کڑوڑ 47 لاکھ 21 ہزار 652 روپے مالیت کی بیش قیمت گاڑیاں 9 لاکھ 94 ہزار 760 روپے کی جیولری موجود ہے۔نقد رقم 9 لاکھ 35 ہزار 200 روپے جبکہ بنک میں 6 کڑوڑ 40 لاکھ 82 ہزار 21 روپے ہیں، عبدالعلیم خان کے پاس موجودہ فرنیچر کی مالیت 19 لاکھ 60 ہزار، روپے علیم خان نے 3سال میں ایک کروڑ 2 لاکھ 77 ہزار 914 روپے ٹیکس دیاہے،عبدالعلیم خان کے موجودہ اثاثوں میں 41 کڑوڑ 7لاکھ 10 ہزار 277 روپے کا اضافہ ہوا ہے ۔پاکستان مسلم لیگ (ن) کے راہنما سردار ایاز صادق کے اثاثوں کل اثاثوں کی مالیت 4 کروڑ 47 لاکھ 95 ہزار نو سو چودہ روپے ہے ۔گزشتہ مالی سال تک ان اثاثوں کی مالیت 4 کروڑ 23 لاکھ 39 ہزار 280 روپے تھی۔ ان کے نام 3 گھر ہیں جن کی مالیت 3 کروڑ 66 لاکھ 99 ہزار 682 روپے ہے جبکہ قومی اسمبلی سے حاصل ہونے والی تنخواہ اور جائیداد کے کرایہ کو ذرائع آمدن ظاہر کیا ہے۔ایازصادق کی بیوی کے نام دو گھر ہیں جن کی کل مالیت 2 کروڑ 68 لاکھ 12 ہزار170 روپے ہے ،ان کی 47.3 ایکڑ کی وراثتی جائیداد جڑانوالہ میں اور10 کنال زمین فتح جنگ اٹک میں بھی ہے، ایاز صادق اور بیوی کے نام حصص کی مالیت 57 لاکھ 95 ہزار 361 روپے ہے، ایاز صادق کی اہلیہ کے 4 بینک اکاؤنٹس میں موجود رقم کی مالیت 21 کروڑ 98 لاکھ 761 روپے ہے ،فرنیچر کی مالیت 80 ہزار40 تولہ متفرق زیورات کی مالیت 80 ہزار روپے ہے۔میاں محمدنواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) صفدر کے اثاثوں کی تفصیلات بھی منظرعام پر آگئی ہے ۔مریم نواز نے حلقہ این اے 125 اور 127 میں اپنے شوہر کی جائیداد کا بھی ذکر کردیاہے۔محمد صفدر کی پاکستان میں 3100 کنال زرعی زمین ہے۔ سابق وزیر اعظم کے داماد کی ملکیت راجن پور میں 2922 کنال زرعی اراضی ہے۔کیپٹن صفدر مانسہرہ میں بھی اراضی کے مالک ہیں۔کیپٹن (ر)صفدر کے اثاثوں کی کل مالیت 4 کروڑ 14 لاکھ روپے ہے۔مریم نواز کے خاوند کے پاس جلو گاؤں مانسہرہ میں 73 کنال زرعی اراضی ہے۔ کیپٹن صفدر کے پاس مانسہرہ دائغ براہ میں 60 کنال زرعی زمین ہے۔کیپٹن صفدر نے سندر انڈسٹریل ایریا کے قریب زیر تعمیر فلور ملز میں 34 لاکھ کی سرمایہ کاری کر رکھی ہے۔اسلام آباد E۔12/4ایک پلاٹ قسطوں پر لیا ہوا ہے۔کیپٹن صفدر کے پاس 4 لاکھ روپے کے بانڈز ہیں۔مانسہرہ میں میں بیٹے جنید کے نام پر 16 کنال کی 2 پراپرٹیز ہیں ،ایک سال میں 17 لاکھ 28 ہزار کا زرمبادلہ آیا ہے۔کیپٹن صفدر کے پاس 10 لاکھ کی جیولری ہے،کیپٹن صفدر کی ملکیتAK47رائفل اور ایک پستول ہے،کیپٹن صفدر کے پاس 7 لاکھ مالیت کا ٹریکٹر بھی ہے جو لیز پر لیا ہوا ہے۔

اثاثہ جات

مزید : صفحہ اول