ہماراکوئی سیاسی ایجنڈا نہیں ، شفاف انتخابات کرا کے گھر چلے جائیں گے

ہماراکوئی سیاسی ایجنڈا نہیں ، شفاف انتخابات کرا کے گھر چلے جائیں گے

لاہور( جاویداقبال ) پنجاب کے نگران وزیراطلاعات احمد وقاص ریاض نے کہاکہ نگران حکومت غیرسیاسی اورآزاد ہے انتخابات بروقت ہونگے فری اور فیئرانتخابات کرانے کے لئے تمام ترتیاریاں مکمل کرلی گئی ہے، ہم اپنے مینڈیٹ میں رہتے ہوئے کام کریں گے ہمارے لئے ملک کی تمام سیاسی اور مذہبی جماعتیں معتبرہیں مگرجوجماعت انتخابات کے دوران عوامی مینڈیٹ لے کرآئے گی اقتدار اس کومنتقل کرکے اپنا فرض پوراکریں گے اور چلے جائیں گے وہ گزشتہ روز’’ پاکستان فورم ‘‘میں اظہارخیال کررہے تھے۔ قبل ازیں انہوں نے روزنامہ پاکستان کے چیف ایڈیٹر مجیب الرحمان شامی سے بھی ملاقات کی ۔بعدازاں اس موقع پرگروپ ایگزیکٹوایڈیٹر قدرت اللہ چوہدری، گرو پ ایڈیٹر کوارڈنیشن ایثار رانااور ڈائریکٹرمارکیٹنگ عتیق الزمان بٹ بھی موجود تھے۔ فورم میں اظہا ر خیال کرتے ہوئے صوبائی وزیراطلاعات ونشریات احمد وقاص ریاض نے مزید کہاکہ پنجاب کی نگران حکومت کا کوئی سیاسی ایجنڈا نہیں ہے ہمار امینڈیٹ بروقت شفاف انتخابات کے عمل کو یقینی بناناہے جس کے لئے ہم کوشاں ہے الیکشن کمیشن اور وفاقی حکومت کی طرف سے دیے گئے اختیارات میں رہتے ہوئے کام کویقینی بنائیں گے ہماری غیرجانبداری کی سب سیاسی جماعتیں مثال دیں گی ہم نے انتخابات کے عمل کو شفاف بنانے کے لئے پنجاب بھرکی پوری بیورکریسی تبدیل کردی گئی ہے انہوں نے کہاکہ ابھی تک اطلاع نہیں ہے کہ کہ انتخابات میں تاخیرہورہی ہے یہ افواہیں ہے جس کا ثبوت کوئی نہیں اور نہ ہی ہمیں ایسے کوئی ہدایات موصول ہوئی ہیں ۔وزیراعلیٰ پنجاب حسن عسکری اور ان کی پوری کابینہ اس امرکویقینی بنائے گی کہ انتخابات شفاف ہوں ایک سوال کے جواب میں صوبائی وزیرنے کہاکہ گورنرز وفاق کے نمائندے ہیں ہمارے کام میں گورنر پنجاب حائل نہیں ہورہے اور نہ ہی ان کی طرف سے کبھی کوئی ہدایت موصول ہوئی ہے اسی طرح بلدیاتی اداروں کے نمائندے میئر ز ،ڈپٹی میئرز ،ضلعی چیئرمینز اور یونین کونسلرکے نمائندے انتخابات کے دوران رہنے چاہیے یانہیں یہ فیصلہ الیکشن کمیشن اور مرکزی نگران حکومت نے کرناہے صوبائی نگران حکومت نے نہیں اور نہ ہی ہمارے مینڈیٹ میں شامل ہے اگر کسی بلدیاتی نمائندے کی کسی سیاسی جماعت سے جانبداری کی شکایت موصول ہوئی تو ایکشن بھی لیں گے اور فوری طور پر الیکشن کمیشن کو بھی آگاہ کریں گے۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ یہ سوال ہی پیدانہیں ہوتاکہ ہم کسی ایک سیاسی یامذہبی جماعت یاکسی ایک گروپ کو فائدہ پہنچانے کے لیے کوئی کام کریں وفاقی اور صوبائی نگران حکومتیں تمام سیاسی جماعتوں کے اتفاق رائے کے عمل میں آئی ہے ان پر انگلی نہیں اٹھائی جاسکتی ہم اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ کوئی افسر کسی جگہ بھی انتخابی عمل پر اثرانداز نہ ہو اور نہ ہی ایک گروپ کو فائدہ پہنچائے۔ پاکستان کے تمام افسر سرکارکے ہے کسی کے ذاتی ملازم نہیں ہم نے سو فیصد انتظامیہ تبدیل کی ہے سرکاری افسر وں پر اعتماد کرناہوگا اگرکسی جگہ غلطی ہوجائے تو ہم فرشتے نہیں ہے ہمار ی حکومت مکمل غیرجانبدار ہے نہ کسی جماعت کی مخالفت کرسکتے ہے اور نہ حمایت، اس وقت یہ بات سچ ہے کہ انرجی اور معاشی مسائل کاسامنا ہے مگر یہ مسائل نگرانوں کے پیداکردہ نہیں ہیں۔ انہوں نے کہاکہ عوام کے پاس بہترین وقت ہے کہ عوامی نمائند وں سے حساب لے سکتے ہے عوام ان کو ووٹ دیں جس کو سمجھتے ہو کہ وہ ان کے لئے بہترثابت ہوسکتاہے اور ان کے مسائل حل کراسکتے ہیں، اس وقت ملک کاسب سے بڑامسئلہ پانی کابحران ہے جو آئندہ دنوں میں شدت اختیارکرے گااس کے لئے آنے والے حکومت کوکام کرناہوگایہ ضروری نہیں ہے کہ کالاباغ ڈیم کاقیام ہی مسئلے کا حل ہے اس کو سیاسی نہ بنائے جائے اس کے علاوہ بھی کئی ڈیم ہے جوپائپ لائن میں ہے ان کو پہلے مکمل کرنا چاہیے۔ یہ بات تسلیم کرناپڑے گی کہ پنجاب میں تعمیراتی میدان میں کام ہواہے لیکن اگر کسی حکومت کی کارگردگی دیکھنی ہے تو یہ دیکھنا ہوگاکہ ہمارے ہسپتالوں میں مریض کا معیاری علاج ہورہاہے انہیں ادوایات مل رہی ہے تھانوں میں مظلوموں کوانصاف مل رہاہے تعلیمی اداروں میں تعلیم کا معیارکیاہے کہ کھیت سے دھقان کوروزی میسر ہورہی ہے۔ نگران حکومت کوئی تحقیقاتی ایجنسی نہیں ہے یہ سارے کام آنے والی حکومت کے ہیں ہماراکام صرف شفاف انتخابات کراناہے جوہم کرائے گے ہم الیکشن کمیشن کی ہدایات کے مطابق کام کریں گے ۔پولنگ اسٹیشنوں پرسیکورٹی کے فول پروف انتظامات کیے جائیں گے تمام پولنگ اسٹیشنوں پر رینجرز اورفو ج تعینات ہوگی اس سلسلے میں الیکشن کمیشن ہدایات جاری کرچکاہے جس پرہم عمل درآمد کرائیں گے۔

مزید : صفحہ اول