بیگم کلثوم کی صحت یابی تک نواز شریف کیساتھ اختلافات سامنے نہیں لاؤں گا : چودھری نثار

بیگم کلثوم کی صحت یابی تک نواز شریف کیساتھ اختلافات سامنے نہیں لاؤں گا : ...

اسلام آباد ( سٹاف رپورٹر ) مسلم لیگ(ن) کے رہنماء چودھری نثار علی خان نے کہا ہے کہ اب تک آزاد حیثیت سے الیکشن لڑنے کے فیصلے پر قائم ہیں، اختلافات کے باوجود نواز شریف کو پارٹی صدارت کیلئے ووٹ دیا، نقصان پہنچانے کا سوچ بھی نہیں سکتا، بہت سی باتیں مجھ سے منسوب کی جا رہی ہیں ، میرے حوالے سے ایسے فقرے سامنے آئے جن کا تعلق مجھ سے نہیں تھا، میری تقریر کو بنیاد بنا کر طرح طرح کی باتیں کی گئیں ، صرف یہ کہا تھا چکری میں نواز شریف سے اختلافات کی بات کروں گا، میں نے تمام باتیں سیاسی کیں، ذاتی نہیں تھیں، میں نے کب یہ کہا کہ یہ منہ دکھانے کے قابل نہیں رہیں گے، نوازشریف کو ہمیشہ دل سے مشورہ دیا، ہاں سے ہاں ملانا وفاداری نہیں ، میرے لئے وفاداری یہ نہیں کہ ہاتھ باندھ کر لیڈر کی ہاں میں ہاں ملاؤں،میں مریم نواز یا پارٹی کی بات نہیں کر رہا، بیگم کلثوم نواز کی صحتیابی تک اختلافات کی وجہ بیان نہیں کروں گا ،اردگرد کسی بس کی طرف نہیں دیکھا کیونکہ میں کسی آوارہ بس کا مسافر نہیں، آزاد کھڑے ہونے پرعمران خان نے امیدوار مقابلے میں نہ اتارنے تک کا کہا، پاکستان مشکل دور سے گزر رہا ہے ، پاکستان کو بند گلی میں دھکیلنے کی سازش ہو رہی ہے، آرمی چیف افغانستان گئے،اگلے دن میں نے کہا خوف آ رہا ہے ضرور کچھ ہو گا، اگلے دن ملا فضل اللہ مارا گیا۔چودھری نثار نے گزشتہ روز پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ میرے بارے میں ایسی خبریں آئیں جو میں نے سوچی بھی نہ تھیں۔ چند روز سے میرے متعلق خبریں گردش کرتی رہیں۔میں مریم نواز یا پارٹی کی بات نہیں کررہا۔میں آج کل انتخابی مہم پر ہوں ، کچھ روز قبل چلنے والی خبروں کی میں تردید کرچکا ہوں میرے منہ میں الفاظ ڈالے گئے جن کا مجھ سے کوئی تعلق نہیں۔چودھری نثار نے کہا کہ میرا کسی پارٹی سے کوئی رابطہ نہیں اورمیں نے کسی جماعت سے سیٹ ایڈجسٹمنٹ نہیں کی لہٰذا25جولائی کو فیصلہ عوام کے سامنے آجائے گا۔چودھری نثار نے کہا کہ میں آزاد کیوں کھڑا ہوں جلد پریس کانفرنس میں بتاؤں گا۔انہوں نے کہا کہ ڈان لیکس کی انکوائری میں نے خود کی تھی اور وزیراعظم ہاؤس سے نیشنل سکیورٹی لیک ہوئی تھی۔

چودھری نثار

مزید : صفحہ اول