بعض حلقوں میں ایم ایم اے اور مسلم لیگ ن سے سیٹ ایڈجسٹمنٹ ہو سکتی ہے ،ساجد میر

بعض حلقوں میں ایم ایم اے اور مسلم لیگ ن سے سیٹ ایڈجسٹمنٹ ہو سکتی ہے ،ساجد میر

لاہور ( خصوصی رپورٹ) امیر مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے کہا ہے کہ عادلانہ نظام کے نفاذ کے لیے ایم ایم اے کا منشور مثالی حیثیت رکھتا ہے۔ انتخابات میں دینی قوتوں کے پاس ووٹ کی طاقت کے اظہار کا بہترین موقع ہے۔مغربی آقاؤں کو خوش کرکے اقتدار حاصل کرنے کا خواب دیکھنے والوں کو عوام مسترد کردیں گے۔ہمارا ایک ہی آقاہے اور وہ ہمارے آخری نبی محمد مصطفی ؐہیں۔ محمدؐ عربی کا دین سربلند ہو کر رہے گا۔ افسوس جو بھی حکومت آئی انہوں نے نظریہ پاکستان اور قیام پاکستان کے مقصد کو فراموش کیا۔ جامعہ ابراہیمیہ میں جمعہ کے اجتماع سے خطاب اور کارکنوں سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ملک میں تبدیلی ووٹ کے ذریعے ہی آنی چاہیے ،انتخابات کو شفاف بنانا نگران حکومت اور الیکشن کمیشن کی بنیادی ذمہ داری ہے۔الیکشن کے بروقت انعقاد کو یقینی بنانا انکی اولین ذمہ داری ہے اور الیکشن کے التوا کی خبروں پر ہمیں تشویش ہے۔ ظاہری طور پر ایسی کو ئی افتاد نظر نہیں آرہی کہ الیکشن میں تاخیر ہو۔ کسی کے ساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کے بارے میں کچھ کہنا قبل ازوقت ہے۔مسلم لیگ ن کی اعلی قیادت کے ساتھ ہم رابطے میں ہیں اسی طرح ایم ایم اے کے پلیٹ فارم پر بھی متحرک کردار اداکررہے ہیں بعض حلقوں میں ایم ایم اے اور مسلم لیگ ن کے ساتھ سییٹ ایڈجسٹمنٹ ہو سکتی ہے۔

مزید : صفحہ آخر