پیپلز پارٹی کی جڑیں عوام میں ہیں ،رحیم داد خان

پیپلز پارٹی کی جڑیں عوام میں ہیں ،رحیم داد خان

شیر گڑھ (مولانا عبداللہ جان سے)الیکشن 2018(انٹر ویو)رحیم داد خان (سابق ڈپٹی سپیکر ،صوبائی وزیرخیبر پختو نخواہ ،نامزد امیدوار پی کے 55پاکستان پیپلز پارٹی )رحیم داد خان پاکستان پیپلز پارٹی سنٹرل کمیٹی کے رکن ،سابق ڈپٹی سپیکر اور صو بائی وزیر خیبر پختونخواہ ایک مدبر سیاستدان ہے۔الیکشن 2018پی کے 55کے لئے پاکستان پیپلز پارٹی کا نامز دامیدوار ہے۔روز نامہ پاکستان سے ایک خصوصی انٹریو میں انہوں نے کہاکہ پاکستان پیپلز پارٹی کی جڑیں عوام میں ہے ۔انتخابات میں پاکستان پیپلز پارٹی بھاری اکثریت سے کامیابی حاصل کرے گی۔چاروں صوبوں اور مرکز میں حکومت بنائنگے۔عوام کی مسائیل کو حل کرنا اور پاکستان کے وقار کو بحال کرنا ہماری اولین ترجیح ہوگی ۔نوجوانوں کو روزگار دینا ہمارا مشن ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارے ساتھ بہترین ٹیم ورک موجود ہے۔حلیم خلجی کے سربراہی میں الیکشن کمپین کا آغاز کیا ہے۔پی کے 55سے بھاری اکثریت سے الیکشن جیتوں گا۔میں نے گذشتہ ادوار میں علاقے کی ترقی کیلئے بھر پور کوشش کی ہے۔سکولوں ،سڑکوں کی تعمیر ،سوئی گیس اور بجلی کی ترسیل کی ہے ۔عوام الناس کے ساتھ قریبی رابطہ ہے۔انہوں نے کہا کہ آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری کی قیادت پر پورا اعتماد ہے۔پاکستان پیپلز پارٹی کا منشور عوام کیلئے ہے۔روٹی کپڑا اور مکان ہمارا منشور ہے۔دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ کرپرامن پاکستان ہماری آرزو ہے ۔صوبے میں گذشتہ حکومت پاکستان تحریک انصاف کی کارکردگی مایوس کن تھی۔تبدیلی کا ڈھنڈورا پیٹا گیا۔حقیقت میں کرپشن کی انتہا کی گئی ۔اداروں کو مفلوج کیا گیا ۔عوام کو مشکلات سے دوچار کیا گیا۔عمران خان اورنواز شریف دونوں نے اقوام عالم میں پاکستان کے وقار کو بہت زیادہ نقصان پہنچایا ۔پاکستان پیپلز پارٹی اقتدار میں آکر پاکستان کا کھویا ہوا وقار بحال کرینگے۔انہوں نے کہا پاکستان پیپلز پارٹی کی تاریخ قربانیوں سے بھری پڑی ہے۔بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے ذریعے لاکھوں غریبوں کی امداد کیا ہے اور روزگار فراہم کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ زرداری سب پر بھاری ثابت ہوگا۔سابق صدر زرداری کی فھم وفراست کے اپنے اور پرائے سب معترف ہیں۔ رحیم داد خان نے کہا کے نوجوانوں کو روزگار دیبے کیلئے ٹھوس منصوبہ بندی کریں گے۔ نوجوانوں سے قوم کو بہت امیدیں وابستہ ہیں ۔نوجوانوں کی فلاح وبہبود کیلئے عملی اقدامات اٹھائیں گے۔کھیل کے میدان بنائیں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر