مظفر آباد،مختلف ٹریفک حادثات میں 5سیاح جاں بحق، 18افراد زخمی

مظفر آباد،مختلف ٹریفک حادثات میں 5سیاح جاں بحق، 18افراد زخمی

مظفرآباد ( بیورو رپورٹ ) آزاد کشمیر کے دارا لحکومت مظفرآباد میں ٹریفک کے مختلف حادثات، 5سیاح جاں بحق 18افراد زخمی، 5کی حالت تشویشناک، شدید زخمی افراد کو کے پی کے اور اسلامی آباد کے بڑے ہسپتالوں میں ریفر کیے جانے کے امکانات۔عباس انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز امبور اور شیخ خالد بن زید ہسپتال سی ایم ایچ میں سٹی سکین کی سہولت میسر نہ ہوے سے مریضوں کے ورثاء کو شدید مشکلات کا سامنا۔وزیراعظم آزاد کشمیر کی جانب سے حادثات وایمرجنسی کی صورت میں مریضوں کو مفت طبی سہولیات کی فراہمی کے اعلانات دھرے کے دھرے، انجکشن،سرنج،کنولہ اور دیگر ادویات ہسپتالوں میں ناپید، مریض ہسپتالوں میں سہولیات کے فقدان کے باعث رلنے لگے۔ورثاء اور عوام سراپا احتجاج۔تفصیلات کے مطابق جمعرات اور جمعہ کے درمیانی شب ایک گھنٹے میں تین مختلف حادثات میں پانچ سیاح جاں بحق دس زخمی جبکہ دیگر دو حادثات میں مقامی خاتون سمیت آٹھ افراد زخمی ہو گئے جن میں سے پانچ کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے۔پشاور سے 23کلو میٹر دور گاؤں شرقبہ پسنی سے سیروتفریح کی عرض سے وادی نیلم آئے سیاحوں کی گاڑی سوا نو بجے پک اپ نمبر 5468کہوڑی کے مقام پر بریک فیل ہونے کے باعث گہری کھائی میں جا گرنے سے پانچ افراد موقع پر جاں بحق ہو گئے جبکہ گیارہ زخمی ہوئے جن میں سے چار کی حالت تشویشناک ہے۔جاں بحق ہونے والوں میں نوید ولد انعام اللہ،فرمان اللہ ولد سعید گل، رحمان اللہ ولد نادر خان کفایت اللہ اور ڈرائیور خمیل خان جبکہ زخمی ہونے والوں میں سبحان اللہ، شاکر اللہ،محمد ندیم، نسیم اللہ، محب اللہ، محمد کامران، سہیل خان، وسیم، وقار، کاشف اور انکے ہمرہا کٹن کا رہائشی نوجوان شاکر قریشی ولد سداوت قریشی شامل ہیں دوسرا حادثہ رات پونے دس بجے تیز رفتار مہران کار اور دو تیز رفتار موٹر سائیکلوں کے سپریم کورٹ چوک کے قریب ٹکرانے کے باعث پیش آیا کار میں ایک خاتون اور ایک مرد سوار تھا جبکہ ایک موٹر سائیکل پر دو نوجوان اور دوسرے پر ایک نوجوان سوار تھا اس حادثے میں زخمی ہونے والوں میں فیض علی ولد صداقت اعوان، خزیل عباسی ولد گلفرار عباسی، تیمور ولد سفیر اعوان اور بلال نامی نوجوان سمیت خاتون زخمی ہوئی۔جبکہ تیسرا حادثہ دولائی کے مقام پر تیز رفتار موٹر سائیکل سوار کو رات ساڑھے نو بجے پیش آیا جس میں دو نوجوان زخمی ہوئے۔امبور ایمز اور سی ایم ایچ مظفرآباد میں حادثات کا شکار ہونے والے افراد کو علاج معالجہ میں ادویات اور دیگر طبی آلات نہ ہونے کی وجہ سے شدید مشکلات کا سامنا رہا ہے۔سرکاری دونوں بڑے ہسپتالوں میں سٹی سکین کی سہولت نہ ہونے سے فی مریض ککے ورثاء کو باہر پرائیویٹ سٹی سکین سنٹرز پر 35سو سے 6ہزار روپے دیکر سٹی سکین کروانا پڑ رہا ہے۔جو کہ وزیراعظم آزاد کشمیر کی جانب سے حادثات وایمرجنسی کی صورت میں مفت علاج معالجہ کے اعلانات کی نفی کر رہا ہے۔مریضوں کے ورثاء اور عوام نے ہسپتالوں میں سہولیات کی عدم فراہمی پر شدید احتجاج کرتے ہوئے ارباب اختیار سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔یادرہے پشاور کے گاؤں شرقبہ پسنی کے جاں بحق ہونے والے افراد کی نعشیں ان کے ورثاء کے حوالے کر دی گئی ہیں اور شدید زخمی پانچ افراد کو کے پی کے اور اسلام آباد کے ہسپتالوں میں ریفر کیے جانے کے امکانات ہیں۔نیلم سے واپس آتے ہوئے کہوڑی کے مقام پر سیاحوں کی گاڑی کو حادثے میں جاں بحق پانچ افراد کی جسد خاکی پشاور بھیج دی گئیں۔ضلعی انتظامیہ کے سربراہ ڈپٹی کمشنر مظفرآباد مسعود الرحمان اور دیگر آفیسران رات گئے تک سی ایم ایچ موجود رہے۔تفصیلات کے مطابق پشاور مردان سے آئے ہوئے سیاحوں کی گاڑی کہوڑی کے مقام پر حادثے کا شکار وئی جس کے نتیجے میں پانچ افراد جاں بحق جبکہ گیارہ زخمی ہوئے۔جن کو سی ایم ایچ مظفرآباد منتقل کیا گیا جہاں ہسپتال انتظامیہ اور ضلعی انتظامیہ کے آفیسران موجود رہے۔زخمیوں کو علاج کی بہترین سہولت فراہم کی گئی۔حادثے میں جاں بحق پانچ افراد کی جسد خاکی ضلعی انتظامیہ نے پشاور مردان بھیج دی۔ڈپٹی کمشنر مظفرآباد مسعود الرحمان کا کہنا ہے کہ کہوڑی سیاحوں کی گاڑی کو حادثہ افسوسناک واقع ہے۔سیاح ڈرائیونگ محتاط انداز سے کریں۔سپیڈ انتہائی کم رکھیں۔دوران ڈرائیونگ موبائل کا استعمال نہ کریں۔دریاء، ندی نالوں، خطرناک راستوں،لینڈ سلائیڈنگ ایریا سے دور رہیں کسی بھی سڑک پر سفر کرنے سے پہلے اس کے بارے میں تمام معلومات لیں۔سیاحوں کی جان ہمیں عزیز ہے۔انتظامیہ پولیس اور متعلقہ ادارے ہمہ وقت ان کی سہولت کے لیے موجود ہیں۔کسی بھی ایمرجنسی کی صورت میں اداروں کے دیئے گئے نمبرات پر رابطہ کر سکتے ہیں۔

Back to Conversion Tool

 

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر