نوجوان کی خواجہ سرائوں سے دوستی، مکان بھی لے کر دے دیا لیکن پھر نوجوان کی شادی ہوئی تو خواجہ سراﺅں نے کیا کام کردیا؟ جان کرآپ کیلئے بھی یقین کرنا مشکل ہوجائے گا کیونکہ۔۔۔

نوجوان کی خواجہ سرائوں سے دوستی، مکان بھی لے کر دے دیا لیکن پھر نوجوان کی ...
نوجوان کی خواجہ سرائوں سے دوستی، مکان بھی لے کر دے دیا لیکن پھر نوجوان کی شادی ہوئی تو خواجہ سراﺅں نے کیا کام کردیا؟ جان کرآپ کیلئے بھی یقین کرنا مشکل ہوجائے گا کیونکہ۔۔۔

  

حیدر آباد (ویب ڈیسک) دوستی ختم کرکے شادی کرنے والے نوجوان کو خواجہ سرائوں نے طیش میں آکر قتل کردیا۔ حیدرآباد پولیس نے قتل میں ملوث 2 خواجہ سرائوں اور 3 افراد کو گرفتار کرلیا۔

ایس پی سٹی زاہدہ پروین نے حیدرآباد پولیس ہیڈ کوارٹر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ 3 روز قبل ڈیفنس پلازہ کے قریب قتل ہونے والے نوجوان جمن چانڈیو کے قاتل خواجہ سراءہیں۔ قتل کے فوراً بعد پولیس نے تحقیقات کر کے شواہد اکھٹے کیے تو معلوم ہوا کے خواجہ سراءپنکی اور نومی نے اپنے پانچ دیگر ساتھیوں کے ساتھ مل کر جمن چانڈیو کو قتل کیا۔

پولیس نے خواجہ سراءنومی اور پنکی کے ساتھ زبیر، محمد علی اور عامر کو گرفتار کرلیا ہے جبکہ ان کے دو ساتھیوں کی گرفتاری کے لیے کوششیں جاری ہیں۔ایس پی سٹی نے مزید بتایا کہ نوجوان جمن چانڈیو کی خواجہ سرائوں سے دوستی تھی، جمن نے نومی نامی خواجہ سراءکو کچہ قلعہ میں مکان لے کر دیا ہوا تھا۔اسی گھر میں خواجہ سراءپنکی رہ رہا تھا۔

جمن نے شادی سے قبل دونوں خواجہ سرائوں کو گھر سے نکلنے کا کہا تو وہ طیش میں آگئے۔ خواجہ سراءنومی اور پنکی نے جمن کو قتل کرنے کی منصوبہ بندی کی اور اپنے پانچ دیگر ساتھیوں کے ساتھ مل کر نوجوان جمن چانڈیوں کو 17 جون کو قتل کر دیا۔ پولیس ملزمان کا تفتیشی ریمانڈ لے کر مزید تحقیقات کر رہی ہے۔

مزید : علاقائی /سندھ /حیدرآباد