پولیس کا چھاپہ، فلیٹ میں موجود 33 حاملہ خواتین پکڑی گئیں، ان کے تمام بچے دراصل کس کے تھے؟ جان کر آپ کی حیرت کی بھی کوئی انتہا نہ رہے گی

پولیس کا چھاپہ، فلیٹ میں موجود 33 حاملہ خواتین پکڑی گئیں، ان کے تمام بچے دراصل ...
پولیس کا چھاپہ، فلیٹ میں موجود 33 حاملہ خواتین پکڑی گئیں، ان کے تمام بچے دراصل کس کے تھے؟ جان کر آپ کی حیرت کی بھی کوئی انتہا نہ رہے گی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

پنام پین(مانیٹرنگ ڈیسک) کمبوڈیا کے دارالحکومت میں گزشتہ دنوں پولیس نے ایک فلیٹ پر چھاپہ مار کر اس میں موجود 33حاملہ خواتین کو گرفتار کر لیا۔ ان خواتین کے پیٹ میں موجود بچوں کے متعلق اب ایسی حقیقت سامنے آئی ہے کہ سن کر آدمی دنگ رہ جائے۔ عالمی خبررساں ایجنسی رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق ان تمام خواتین کے پیٹ میں موجود بچے چینی جوڑوں کے تھے جو خود بچہ پیدا نہیں کرنا چاہتے تھے چنانچہ انہوں نے ان خواتین کو پیسے دے کر ’متبادل ماں ‘ (سروگیٹ)بنایا تھا۔

رپورٹ کے مطابق اس فلیٹ میں ایک کلینک بنایا گیا تھا جس میں آپریشن تھیٹر بھی موجود تھا جہاں ان کے آپریشن کرکے ان کے پیٹ میں چینی جوڑوں کے بچے رکھے گئے تاکہ وہ انہیں جنم دے سکیں۔ یہ کلینک ایک چینی منیجر چلا رہا تھا۔ چھاپے میں اسے بھی گرفتار کر لیا گیا۔پنام پین کے اینٹی ٹریفکنگ آفس کے ڈائریکٹر کیو تھیا کا کہنا تھا کہ ”چینی منیجر نے چار کمبوڈین خواتین کو بھرتی کر رکھا تھا جو دیگر خواتین کو سروگیٹ بننے پر رضامند کرکے کلینک لاتی تھیں۔ ان پانچوں کے خلاف مقدمات درج کر لیے گئے ہیں۔تاہم حاملہ خواتین کے خلاف فی الحال مقدمات درج نہیں کیے جا سکتے۔ان حاملہ خواتین کو فی کس 10ہزار ڈالر (تقریباً10لاکھ روپے) دینے کا وعدہ کیا گیا تھا۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی