بچوں کو سبزیاں کھلائیں!

بچوں کو سبزیاں کھلائیں!

  

صباح یاور خان

سبزیوں کا استعمال اپنی افادیت کی بدولت دنیا بھر میں مقبول ہے۔ ماڈرن سائنس نے بے شمار تحقیقات کے بعد اس بات کو ثابت کیا ہے کہ ان کو محض بھوک مٹانے یعنی غذائیت حاصل کرنے کے لیے ہی نہیں بلکہ مختلف امراض کا علاج کرنے کے لیے بھی استعمال کیا جاتا ہے۔ بلڈ پریشر کی بیماری پر قابو پانے، دل کی تکالیف، اسٹروکس، پیٹ کی تکالیف، امراضِ چشم، مختلف اقسام کے کینسر سے بچاؤ اور بلڈ شوگر کو کنٹرول میں رکھنے کے لیے سبزیاں کلیدی کردار ادا کرتی ہیں۔

لیکن کیا کیا جائے منے کا جو ہمہ وقت سبزیوں سے آنکھیں چراتا ہے۔ بے شمار ماؤں کو اپنے بچوں سے یہ شکایت رہتی ہے کہ وہ سبزیاں نہیں کھاتے۔ توری، ٹنڈے دیکھ کر ہی ان کی بھوک ختم ہوجاتی ہے، گوبھی، بھنڈی سے انہیں اُبکائی آتی ہے یا پھر پالک گھاس پھوس نظر آتی ہے۔ مائیں لاکھ جتن کرلیں لیکن دورِ حاضر کے Fast Food کے دیوانے بچے سبزیوں سے کوسوں دور بھاگتے ہیں۔

کیا آپ کا شمار بھی ان پریشان ماؤں کی فہرست میں ہوتا ہے تو اب فکر مند ہونا چھوڑ دیں۔ یہ خاص الخاص مضمون ان تمام ماؤں کے لیے مشتعل راہ ثابت ہوگا جو اپنے بچوں کے جسم کو سبزیوں میں موجود وٹامنز، پوٹاشیم، سوڈیم، میگنیز، نمکیات اور دیگر قیمتی غذائی اجزاء کے ذریعے طاقتور بنانا چاہتی ہیں۔ آزمائش شرط ہے۔

سبزیاں سجا کر فریج میں رکھیں:

فریج میں سبزیاں ایسی جگہ رکھیں جہاں بآسانی بچوں کی نظر اور ہاتھ جاسکے۔ افسوس کی بات یہ ہے کہ کیک، برگر، چاکلیٹ اور سینڈوچ فریج میں نظروں کے عین سامنے رکھے جاتے ہیں جبکہ سبزیاں، ڈبوں اور تھیلوں میں بند کرکے رکھی جاتی ہیں۔ سلاد کے ڈبے اور کچی سبزیاں خوبصورت پلیٹ میں سجا کر آگے کرکے رکھیں۔ سلاد کے ساتھ بچوں کوکیچپ دیں، مایو نیز یا دیگر ساسز Sauces کے ساتھ سرو کریں تاکہ بچہ شوق سے کھائے۔

روز سبزی پکائیں:

مرغی، گوشت کے علاوہ سبزی بھی روزانہ پکائیں، اتوار کے روز پورے ہفتہ کا مینیو بناکر رکھیں تاکہ سبزیوں کے انتخاب میں مشکل نہ ہو۔ ہر روز نئے رنگ اور ذائقہ کی سبزی بنائیں۔ سالن مقدار میں کم اور ذائقہ میں بھر پور ہونا شرط ہے۔ کھانا کھاتے وقت آپ اور آپ کے بچے کی پلیٹ میں سبزی ضرور موجود ہو۔ فائیوسٹار ہوٹل اور مہنگے ریستوران میں کھانا سرو کرتے وقت آرڈر کی گئی ڈش میں آدھا حصہ سلاد، مختلف، Sauces اور مکھن میں پکی ہوئی پالک اور کچی سبزیوں پر مشتمل ہوتا ہے۔ آپ بھی اپنے گھر میں اسی انداز کو اپنائیں۔ سبزی ترکاری کو بطور Side Dish پکائیں، کبھی کبھار اسے گوشت کے ساتھ ملا کر بطور Main Dish تیار کریں۔

سکول لنچ میں سبزی کیوں نہیں؟

ہفتے کا ایک دن لنچ بکس میں سبزی کا دن مقرر کردیں، گاجر، کھیرا، ککڑی، ٹماٹر کاٹ کردیں۔ تیز چھری کی مدد سے گاجر کے پھول اورکھیرے کی کشتی بنائیں۔ سبزیوں کے کٹلس اور سیخ کباب بناکر بچوں کو کھلائیں۔ بچوں میں پکی ہوئی سبزی کے ساتھ ساتھ کچی سبزیاں کھانے کی عادت بھی ڈالیں۔ روزانہ نئے ذائقہ کی ڈش بنائیں تاکہ بچہ شوق سے کھائے۔

نئی سبزیاں خریدیں:

سبزیوں کا انتخاب کرتے وقت ورائٹی کو مدنظر رکھیں، روزانہ وہی مخصوص سبزیاں خریدنے کے بجائے سبزی کی دکان یا ٹھیلے پر موجود نئی تازہ، خوش رنگ اور خوش ذائقہ سبزی کا انتخاب کریں۔ بروکلی، مشروم، پھلیاں اور ساگ بھی پکائیں، مکھن میں مشروم، کالی مرچ، نمک ڈا ل کرتیار کریں۔ ہرا دھنیا، ہری مرچ سے گارنش کریں۔ آپ کے دسترخوان پر ہر قسم کی ورائٹی ہونی چاہیے۔ یاد رکھیں تبدیلی ضروری ہے۔ آزما کر دیکھیے بچہ تو بچہ بڑے بھی اپنا ہاتھ کھانے سے نہیں روک سکیں گے۔

صرف آلو کے چپس ہی کیوں؟

آلو بچے بڑے سب کی من بھاتی سبزی ہے۔ چپس کا ذکر کیا جائے توذہن میں آلو کا نام ہی آتا ہے۔ آج ”بھے“ کے چپس بنا کر دیکھیں۔ بھے بآسانی سبزی مارکیٹ میں دستیاب ہوتی ہے۔ اسے اچھی طرح دھوکر پیاز کاٹنے والے کٹر سے پتلے پتلے سلائس کلاٹ لیں اور تل لیں۔ نمک، کالی مرچ اور لیموں کا رس چھڑک کر بچوں کو دیں وہ انہیں آلو کے چپس کے مقابلے میں زیادہ شوق سے کھائیں گے۔ سبزیوں کا تمپورا بنائیں، پالک، بینگن، ٹنڈے، آلو کے پکوڑے کھلائیں۔ ہر ڈش منفرد انداز میں بچوں کو پیش کریں۔

آج سبزیوں کا دن ہے:

ہفتے میں ایک دن صرف سبزیاں کھائیں، یہ ہمارے جسم کے اندرونی نظام کی صحت و صفائی کے لیے بھی بے حد ضروری ہے۔ سبزیوں کی بریانی، چائنیز رائس، ویجیٹیبل منچورین، پالک پنیر، مکس ویجیٹیبل، لوکی آلو، کارن پلاؤ بہترین انتخاب ہیں۔ سبزیوں کا Pizza، ویجیٹیبل برگر، نوڈلز بمعہ ویجیٹیبل بنائیں۔ سبزیوں کا جوس فینسی گلاس میں سرو کریں، بچے اور بڑے شوق سے پئیں گے۔

بچوں کو سبزی منڈی ضرور لے جائیں، انہیں اپنی مرضی کی سبزی خریدنے دیں۔ سبزیوں کے متعلق کہانیاں سنائیں۔ گیم کھیلیں، بہت چھوٹے بچوں کو سبزیوں کی تصاویر میں رنگ بھرنے کے لیے کہیں، ان کی من پسند سبزی دہی میں مکس کرکے دیں۔ بچہ اگر سلاد نہ کھا رہا ہو تو اسے سلاد میں بادام، اخروٹ، کشمش، پھل اور دلیہ مکس کرکے دیں۔ سلاد بناتے وقت بچے کو کہیں کہ وہ آپ کی مدد کرے۔ اس طرح اس میں کھانے کا شوق پیدا ہوگا۔ اگر کبھی بچہ سبزی نہ کھانا چاہے تو اس پر ڈنڈا لے کر کھڑی نہ ہوجائیں بلکہ زور زبردستی تو بالکل نہ کریں، کھانے کے وقت کو فن ٹائم بنالیا جائے تو بچہ خود بخود پلیٹ صاف کرنے پر مجبور ہوجائے گا۔

٭٭٭

آج کا

مزید :

ایڈیشن 1 -