معروف عالم دین علامہ جوہری رضویہ سوسائٹی کراچی میں سپرد خاک

    معروف عالم دین علامہ جوہری رضویہ سوسائٹی کراچی میں سپرد خاک

  

کراچی (سٹاف رپورٹر) معروف شیعہ عالم دین علامہ طالب جوہری طویل علالت کے بعد انتقال کرگئے۔علامہ کی نماز جنازہ امروہہ گراؤنڈ میں ادا کردی گئی،نمازجنازہ مولانا مصطفی وکیل نے پڑھائی،بعد ازاں علامہ طالب جوہری کو رضویہ سوسائٹی میں ان کے مدرسے کے احاطے میں سپرد خاک کیا گیا۔علامہ طالب جوہری 27 اگست 1939 کو پیدا ہوئے۔ ان کے والد مشہور عالم دین علامہ مصطفی خاں جوہر تھے۔ علامہ طالب جوہری کو کئی برسوں سے پاکستانی علماء میں مرکزی حیثیت حاصل تھی۔ کراچی کے نشتر پارک میں شام غریباں کی مجلس سے ان کی شہرت پاکستان او دنیا بھر میں پھیل گئی۔ اس مجلس کے سامعین میں مسلمانوں کے تمام طبقہ ہائے فکر شامل تھے۔علامہ طالب جوہری فن تقریر میں صاحب اسلوب تھے۔ ایک دل نشیں مقرر ہونے کے علاوہ بھی علامہ طالب جوہری کی کئی جہتیں تھیں۔ انہوں نے کئی کتابیں لکھیں جن میں قرآن کی تفسیر اور شاعری بھی کی۔ ان کی شاعری کے تین مجموعے شا ئع ہو چکے ہیں۔ علامہ طالب جوہری 1939 میں بمقام پٹنا انڈیا میں پیدا ہوئے۔ ابتدائی تعلیم اپنے والد مولانا مصطفے جوہری کی زیر نگرانی ہوئی، 1949 میں اپنے والد کے ہمراہ پاکستان آئے، 10 سال نجف میں اعلیٰ دینی تعلیم حاصل کی، علامہ طالب جوہری حافظ قرآن، مفسرِ قرآن، مصنف اور ایک شاعر بھی تھے۔ علامہ طالب جوہری کی مجلسِ شامِ غریبا ں اور نشتر پارک کی مجالس ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔ علامہ طالب جوہری کئی روز سے کراچی کے نجی ہسپتال کے انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں زیرعلاج تھے جن کی طبیعت نہ سنبھل سکی اور وہ خالق حقیقی سے جا ملے۔ علامہ طالب جوہری کے انتقال پر صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی، وزیر اعظم عمران خان،آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے اپنے گہرے دکھ اورافسوس کا اظہار کیا ہے، ان کا کہنا ہے کہ علامہ کے انتقال سے جو خلا پیدا ہوا ہے اس کا پر ہونا ناممکن ہے۔ علامہ طالب جوہری نے بین العقائد ہم آ ہنگی اور پر امن بقاے باہمی کو فروغ دیا۔ اللہ تعالی مرحوم کے درجات بلند کرے،غمزدہ خاندان کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں،اللہ تعالی سوگواران کو صبر جمیل عطا فرمائے۔ پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری، سابق صدر آصف زرداری، صدر مسلم لیگ (ن)، قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے انتقال پر گہرے دکھ و افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اپنے تعزیتی پیغام میں کہاکہ علامہ طالب جوہری کے انتقال سے علم اور فکر کا ایک روشن ستارہ غروب ہوگیا۔وہ نہ صرف ایک مقبول خطیب و مفکر تھے، بلکہ خلوص، انکساری اور اعتدال پسندی کی وجہ سے ملک کے تمام حلقوں میں مقبول تھے۔ بین المسا لک ہم آہنگی و قومی یکجہتی کے فروغ کیلئے ان کی گرانقدر خدمات ناقابلِ فراموش ہیں۔علامہ طالب جوہری کی کمی برسوں تک محسوس کی جاتی رہے گی،دعاگو ہوں، اللہ تعالیٰ مرحوم کو جنت الفردوس اور اہلخانہ سمیت تمام سوگواروں کو صبر جمیل دے۔ وفاقی وزیر بحری امورعلی زیدی، وزیر توانائی سندھ امتیازشیخ، ایم کیوایم پاکستان کے رہنماؤں خالد مقبول صدیقی، عامرخان، کنورنوید جمیل، پی ٹی آئی رہنما خرم شیرزمان، آفتاب صدیقی، پی ایس پی رہنماؤں انیس ایڈووکیٹ، رضاہارون، ڈاکٹرصغیراحمد، ڈاکٹرفاروق ستار، علامہ شہنشاہ نقوی، قائد تحریک منہاج القرآن ڈاکٹر طاہرالقادری، تحفظ عزاداری کونسل کے چیئرمین آغا رحیم نے اپنے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیااورکہا علامہ طالب جوہری جیسی شخصیات صدیوں میں پیدا ہوتی ہیں۔مرحوم کی شامِ غریباں اورنشتر پارک کی مجالس ہمیشہ یاد رہیں گی، مرحوم کی علمی اوردینی خدمات کوخراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔اس کے علاوہ ملک بھر کی سیاسی سماجی اور مذہبی شخصیات نے بھی علامہ طالب جوہری کی رحلت پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ان کے لیے دعائے مغفرت کی ہے۔

طالب جوہری

مزید :

صفحہ اول -