چولستان: بارشیں نہ ہونے سے قدرتی چراگاہیں ختم، ٹوبے خشک

چولستان: بارشیں نہ ہونے سے قدرتی چراگاہیں ختم، ٹوبے خشک

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)چولستان میں 64 لاکھ ایکڑ رقبہ پر2 لاکھ24ہزار جانور موجود ہیں بارشیں نہ ہونے کی وجہ سے قدرتی چراگاہیں ختم ٹوبوں سے پانی بھی خشک ہونے لگابارشوں کے بعدہی چولستان میں رونقیں بحال ہونگی۔ محکمہ جنگلات چولستان نے.(بقیہ نمبر23صفحہ6پر)

بارشی پانی کومحفوظ بنانے کیلئے60 ٹوبہ جات کی ڈی سلٹنگ کرادی ہے۔ یہ باتیں ڈسٹرکٹ فاریسٹ آفیسرچولستان محمداعجاز تبسم نے ایک ملاقات کے دوران بتائیں انہوں نے بتایاکہ چولستان میں جانوروں کی تعداد3 لاکھ24 ہزار ہے جن میں سب سے زیادہ گائے بھیڑیں اوراونٹ پائے جاتے ہیں انہوں نے کہاکہ اونٹ کوریگستانی جہاز کہاجاتاہے اسی نسبت سے پورے پاکستان کے مقابلے میں چولستان میں سب سے زیادہ اونٹ موجود ہیں۔ انہوں نے بتایاکہ محکمہ جنگلات چولستان میں خودروپودوں اوردرختوں کی حفاظت پرمامورہے اس کے علاوہ بارشوں کے موسم میں ذرخیزعلاقوں میں چولستانی گھاس کے بیج بھی بکھیرے جاتے ہیں تاکہ بارش کی وجہ سے چولستانی گھاس بھی آگ سکے جس سے چولستانیوں کے جانوراپنی خوراک حاصل کرلیں انہوں نے مزید بتایاکہ چولستان میں گائے بھیڑاونٹوں کے علاوہ بکریاں بھی کافی تعداد میں موجود ہیں جوچولستانیوں کی ترقی کی علامت سمجھی جاتی ہیں انہوں نے کہاکہ چولستانیوں سے تر نی ٹیکس کی وصولی اورچولستانیوں کاریکارڈ مرتب کرنے کیلئے مقامی نمبرداروں سے مددحاصل کی جاتی ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -