نجی شعبہ کو گندم درآمد کرنے کی اجازت، آکسیجن اور سلنڈر پر ٹیک چھوٹ کی منظوری، صوبے جلد گندم کوٹہ جاری کرنے کی پالیسی کا اعلان کریں، اقتصادی رابطہ کمیٹی

نجی شعبہ کو گندم درآمد کرنے کی اجازت، آکسیجن اور سلنڈر پر ٹیک چھوٹ کی منظوری، ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)اقتصادی رابطہ کمیٹی نے ملک میں آٹے اور گندم کی قیمتوں میں کمی کے حوالے سے اقدامات کی منظوری دیتے ہوئے نجی شعبہ کو گندم کی درآمدکی اجازت دیدی جبکہ صحت کے شعبہ کیلئے آکسیجن اور سلنڈرز پر ٹیکس چھوٹ،حساس ادارے کو اسلام آباد میں 45 ایکڑ زمین الاٹ کرنے کی بھی منظوری دی گئی،اسلام آباد پولیس کیلئے 40 کروڑ روپے کی سپلیمنٹری گرانٹ منطورکرلی گئی۔پیر کے روز مشیر خزانہ حفیظ شیخ کی زیر صدارت ای سی سی کا اجلاس ہوا جس میں ملک میں گندم، آٹے کی قیمتوں میں کمی کے اقدامات کی منظوری دیدی گئی جبکہ نجی شعبہ کو گندم کی درآمد کی اجازت بھی مل گئی۔اجلاس میں حکام کی جانب سے بریفنگ میں کہاگیا کہ نجی شعبے نے 25 لاکھ ٹن گندم درآمد کرنے میں دلچسپی ظاہر کی ہے، عالمی منڈی میں آئندہ 2 ماہ میں گندم کی قیمتیں کم ہوں گی۔اقتصادی رابطہ کمیٹی نے پنجاب سمیت دیگر صوبوں کو ضرورت کے مطابق گندم فراہم کرنے کی ہدایت کی۔ اجلاس میں صحت کے شعبہ کیلئے آکسیجن اور سلنڈرز پر ٹیکس چھوٹ دینے کی منظوری دی جبکہ آکسیجن سلنڈر کی قیمتوں میں کنٹرول کیلئے 3 ماہ تک مراعات دینے کی بھی منظوری دی گئی۔ای سی سی اجلاس میں سی ڈی اے کو ڈھائی ارب روپے کی سپلیمنٹری گرانٹ بھی منظور کرلی گئی، جبکہ پاک بحریہ کیلئے بھی سپلیمنٹری گرانٹ کی منظوری دیدی گئی،اجلاس میں وزار تو ں، ڈویژ نوں، محکموں کے افسران کو اعزازیہ دینے کی تجویز واپس لے لی گئی۔ وفاقی کابینہ آج بروزمنگل ای سی سی کے گندم کے درآمد کے اجازت کے فیصلے کی توثیق کرے گی۔ تر جمان وزارت خزانہ کے مطابق ای سی سی کے اجلاس میں فیصلہ کیاگیا کہ نجی شعبہ پر گندم کی درآمد کیلئے کوئی حد مقرر نہیں کی جائیگی اور گندم کی صورتحال کو ہر ماہ مانیٹر کیا جائیگا تاکہ پو ر ے ملک میں گندم اور آٹا مناسب قیمت پر لوگوں کو دستیاب ہو۔ اسی سی سی نے صوبوں کو ہدایت کی کہ وہ فوری طور پر گندم کوٹہ جاری کرنے کی پالیسی کا اعلان کریں، پنجاب 9لاکھ ٹن گند م آئندہ دو ماہ میں فلور ملز کو جاری کرے گا جس کی ریلیز پرائس پنجاب حکومت طے کرے گی،حکومت سندھ سے کہا جائے گا کہ وہ بھی اپنی پالیسی کا اعلان کرے پاسکو خیبر پختونخوا اور بلوچستان کی گندم کی ضروریات کا تعین کرے گا اورطے شدہ اہداف کے تحت گندم کی سپلائی بہتر بنائی جائے گی، پنجاب خیبر پختونخوا اور بلوچستان کے درمیان گندم کی نقل وحمل کو آسان بنایا جائیگا بلاتفریق گندم کی آزادانہ نقل وحمل کو ضلعی او ر صوبائی سطح پر بھی یقینی بنایا جائیگا نہ صرف گندم درآمد کرنیوالے نجی شعبے کو سہولیات دی جائینگی بلکہ امپورٹ کیلئے سبسڈی کے اثرات کو بھی دیکھا جائیگا، گندم کی درآمد کے مالیاتی اثرات کو بھی مدنظر رکھا جائیگا یہ بھی تجویز کیاگیا کہ اگر نجی شعبہ گندم درآمد نہیں کرتا تو حکومت خود درآمد کرے آٹا اور گندم کے درمیان قیمتوں میں توازن ہوگا تاکہ کوئی مسئلہ پیدا نہ ہو آٹے کی کسی بھی چیک پوائنٹ سے افغانستان سمگلنگ کی اجازت نہیں دی جائے گی، پورے سال کیلئے طو یل اور وسط مدتی حکمت عملی تشکیل دینے کیلئے گروپ قائم کیاجائیگا۔ای سی سی نے پنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کیلئے 2.5ارب روپے کی ضمنی گرانٹ کی بھی منظوری دی تاکہ میٹرو بس کے آپریشن میں جو وفاق کا حصہ ہے اسے پورا کیا جاسکے۔اجلاس میں وزارت صحت اور وزارت داخلہ کو ہدایت کی گئی کہ وہ آکسیجن پیدا کرنیوالی کمپنیوں کے تمام واجبات ادا کریں طبی مقاصد کیلئے آکسیجن کی سپلائی کو یقینی بنایا جائے اور اس حوالے سے ہسپتالوں اور آکسیجن پلانٹس والوں سے کہا گیا کہ وہ آکسیجن کے نرخ کم رکھیں۔ خزانہ ڈویژن کی ایک تجویز کی بھی منظوری دی گئی جس کے تحت صوبائی حکومتوں کو قرض دینے کی نئی پالیسی بنائی جائے گی تاکہ ان کی ضروریات پوری ہوسکیں اور اس حوالے سے معاہدے سٹیٹ بینک اور فنانس ڈویژن دستخط کیا کرینگے،نئی پالیسی کے تحت پنجاب کے ویز اینڈ مینز کی حد 37ارب سے بڑھا کر 77ارب سندھ کی 15سے بڑھا کر 39ارب،خیبر پختونخوا کیلئے 10.1ارب سے بڑھا کر 27ارب اور بلوچستان کیلئے قرضوں کی حد 7.1سے بڑھا کر 17ارب روپے کردی گئی۔

ای سی سی

مزید :

صفحہ اول -