غیرملکیوں کے حج پر پابندی،جن لوگوں نے پیسے جمع کروارکھے ہیں ان کا کیا ہوگا؟

غیرملکیوں کے حج پر پابندی،جن لوگوں نے پیسے جمع کروارکھے ہیں ان کا کیا ہوگا؟
غیرملکیوں کے حج پر پابندی،جن لوگوں نے پیسے جمع کروارکھے ہیں ان کا کیا ہوگا؟

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) سعودی عرب نے رواں سال غیر ملکی افراد کی حج کے لیے میزبانی سے معذرت کرلی۔  وفاقی وزیر برائے مذہبی امور نورالحق قادری کہتے ہیں نئی صورتحال پر ہنگامی اجلاس بلا لیاگیاہے۔

پاکستان میں جن لوگوں نے حج کے لیے پیسے جمع کروارکھے تھے حکومت انہیں ان کی رقوم واپس کرے گی۔

نجی ٹی وی ہم نیوز کے مطابق وزارت مذہبی امور کے ترجمان نے کہا ہے کہ سعودی وزارت حج وعمرہ نے حج کی ادئیگی سےمتعلق پریس ریلیزجاری کردی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے سعودی عرب اس سال غیر ملکی عازمین حج کی میزبانی نہیں کرے گا ۔

پاکستان سمیت دنیا بھر سے عازمین اس سال حج کی ادائیگی کے لیے نہیں جا پائیں گے۔

  تاہم مملکت میں موجود تمام اقامہ ہولڈرز مقامی شہریوں کے ساتھ حج اداکرسکیں گے۔

سعودی عرب میں مقیم پاکستانی سفیر، سفارتی عملہ اور پاکستان حج ڈائریکٹریٹ پاکستان کی اس سال نمائندگی کریں گے۔

وزارت مذہبی امور کے ترجمان کے مطابق سعودی وزیر حج نے پاکستانی وزیر برائے مذہبی امور نورالحق قادری سے ٹیلی فونک رابطہ کیا ہے۔ٹیلی فون پر ہونے والی بات چیت میں ڈاکٹر صالح بن بنتن نے حج سے متعلق کیے جانے والے فیصلے سے باضابطہ طور پر آگاہ کردیا۔

ترجمان وزارت مذہبی امور کے مطابق پاکستان میں جن لوگوں نے حج کے لیے رقم جمع کروارکھی تھی انہیں ان کے پیسے واپس کیے جائیں گے اور وزارت مذہبی امور نے کہا ہے کہ اس حوالے سے خصوصی لائحہ عمل تیارکیاجائے گا اور اس حوالے سے ہنگامی اجلاس بلا لیا گیاہے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -